خزانہ اسحاق ڈار نے گورنر سٹیٹ بنک کے مستقل گورنر کی تعیناتی کا اعلان کردیا

خزانہ اسحاق ڈار نے  گورنر سٹیٹ بنک کے مستقل گورنر کی تعیناتی کا اعلان کردیا

وزیر خزانہ اسحاق ڈار کی زیر صدارت بنکوں کے سربراہان کا اجلاس ہوا، جس میں ڈالر کی قیمتوں میں اچانک اضافے اور دیگر مالی معاملات پر تفصیلی گفتگو کی گئی، اجلاس میں ڈالر کو 105سے 107روپے کےدرمیان رکھنے پراتفاق کیا گیا، صدر نیشنل بنک سعید احمد کا کہنا تھا کہ امید ہے ایک دو روز میں معاملات سنبھل جائیں گے، اجلاس کے بعد میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے وزیر خزانہ اسحاق ڈار کا کہنا تھا کہ ڈالر مہنگا ہونے کی کوئی وجہ نظر نہیں آتی، ڈالر کی قدر میں اچانک اضافہ حیران کن تھا، ایسالگ رہا تھا کہ سیاسی صورتحال کے باعث ڈالر کی قیمت میں اتار چڑھاو آیا، لیکن افسوس سے کہنا پڑتا ہے ڈالر کی قیمت میں اتار چڑھاؤ رابطوں کے فقدان کی وجہ سے آیا،حکومت کی ڈالر مہنگا کرنے کی کوئی پالیسی نہیں، معاملے کی انکوائری کریں گے۔
وزیر خزانہ نے گورنر سٹیٹ بنک کی مستقل تعیناتی کا اعلان بھی کیا، کہا کہ وزیراعظم کی وطن واپسی پر مستقل گورنر کا فیصلہ ہو جائے گا۔اسحاق ڈار کا کہنا تھا کہ ڈالر چند گھنٹوں میں ساڑھے تین روپے سستا ہو گیا ہے، کسی فرد کے پاس یہ اختیار نہیں کہ ڈالر کی مصنوعی ایڈجسمنٹ کرسکے، کل بھی کہا تھا یہ ان کی ذات کامعاملہ نہیں پاکستان کا معاملہ ہے، انہیں سمیت انفرادی طور پرکسی کو بھی قیمت کے تعین کا اختیار نہیں،، وہ پاکستان کا پہلے سوچتے ہیں، ہر وقت قربانی کیلئے تیار رہتے ہیں۔

Most Popular