کراچی میں سرکلیولر ریلولے کی 66 ایکڑ زمین پر قبضے کا انکشاف کیا گیا ہے

کراچی میں سرکلیولر ریلولے کی 66 ایکڑ زمین پر قبضے کا انکشاف کیا گیا ہے

وزیراعلیٰ سندھ کی زیرصدارت اجلاس میں بتایا گیا کہ کراچی سرکیولر ریلوے کی سڑسٹھ ایکڑ اراضی پر قبضہ کر لیا گیا ہے، اجلاس میں ڈی ایس ریلوے سندھ نے تفصیلات بتاتے ہوئے کہا کہ وزیر مینشن کے قریب اٹھائیس سے انتیس ایکڑ اراضی پر قبضہ ہے، وزیر مینشن سے بلدیہ، اورینج نالے کے قریب، ناظم آباد اور لیاقت آباد تک بھی زمین پر قبضہ ہے، لیاقت آباد سے گیلانی اسٹیش، اردو کالج، یونیورسٹی روڈ اور ڈیپاٹ ہل تک بھی زمین پر قبضہ ہے، انہوں نے بتایا کہ کراچی سرکیولر ریلوے کے لئے تین سو ساٹھ ایکڑ زمین کی ضرورت ہے، جبکہ منصوبے کے لئے تینتالیس اعشاریہ بارہ کلو میٹر اراضی مختص ہے، ان کا کہنا تھا کہ منصوبے کی لاگت دو ہزار چھے سو نو ملین ڈالر ہے، اجلاس میں وزیراعلیٰ نے قبضہ ختم کرنے کی ہدایت کرتے ہوئے کمشنر اور ڈپٹی کمشنرز کو نگرانی کی ہدایت کردی، وزیراعلیٰ نے ایک ہفتے کے اندر رپورٹ بھی طلب کر لی ہے، انہوں نے آئندہ ہفتے کراچی سرکیولر ریلوے پر پیشرفت لینے کے لئے دوبارہ اجلاس بلانے کی بھی ہدایت کی ہے ۔

Most Popular