پاک افغان ٹرانزٹ ٹریڈ اتھارٹی کے دو روزہ مذاکرات کا پہلا دور اسلام آباد میں ہوا

پاک افغان ٹرانزٹ ٹریڈ اتھارٹی کے دو روزہ مذاکرات کا پہلا دور اسلام آباد میں ہوا

دوروزہ مذاکرات میں پاکستانی وفد کی قیادت ایڈیشنل سیکرٹری تجارت فضل عباس میکن اور افغان وفد کی قیادت ڈپٹی وزیر تجارت مزمل شنواری کر رہے ہیں۔مذاکرات کے افتتاحی سیشن سے خطاب کرتے ہوئے ایڈیشنل سیکرٹری فضل عباس کا کہنا تھا کہ ریجنل ٹریڈ خطے کی ترقی کےلئے اہمیت کی حامل ہے جبکہ گزشتہ سال دونوں ممالک کے درمیان تجارت کا حجم دو ارب پچاس کروڑ ڈالر رہا جس میں مزید اضافہ ہونا چاہیے۔اس موقع پرافغان وزیر کا کہنا تھا کہ پاکستان کے یکطرفہ فیصلوں سے افغانی تاجروں کا رجحان ایران کی طرف ہو رہا ہے جبکہ تجارت کے حوالے سے دونوں ممالک کے بینک گارنٹی دینے پر تیار نہیں اور انشورنس کمپنیاں افغان تاجروں کو پریمیئر کی ادائیگی میں رکاوٹ ڈال رہی ہیں،ان مسائل کا حل فوری طور پر ضروری ہے۔ ذرائع کے مطابق مذاکرات کےپہلے روز افغان حکام نے افغان ٹرکوں کو پشاور میں روکنے کی بجائے واہگہ تک جانے کی اجازت دینےکا مطالبہ کیا جس پر غورجاری ہے۔

About the author /

Waqt News

Waqt News Web Team

Most Popular