مزدورں‘ کسانوں کو حقوق کیلئے باہر نکلنا پڑیگا: جواد احمد

مزدورں‘ کسانوں کو حقوق کیلئے باہر نکلنا پڑیگا: جواد احمد

 معروف گلوکار جواد احمد نے کہاہے کہ مزدورں اورکسانوں کو اپنے حقوق کیلئے باہرنکلناپڑے گا،سٹوڈنٹس یونین بحال ہونی چاہیے۔ان خیالات کااظہارانہوں نے گزشتہ روزلاہورپریس کلب میٹ دی پریس میں اظہارخیال کرتے ہوئے کیا۔ان کاکہناتھاکہ مزدوروں اورکسانوں کواس وقت حقوق نہیںمل سکتے جب تک ان کی یونینزنہیںبنتیں اوروہ خودباہرنہیںنکلتے ۔ایوان میں بیٹھے ہوئے سیاستدان خودجاگیرداراورسرمایہ دارہیں،وہ مزدوروں کی آوازکیسے اٹھائیں گے اورانکے قوانین کیونکربنائیںگے ۔اس طبقے کی خوشحالی اس وقت ممکن ہے جب مزدوروں کی کوئی سیاسی جماعت بنے گی۔ میں کو ئی پارٹی نہیںبنارہا۔مجھے گزشتہ انتخابات کے دوران مسلم لیگ ن ،تحریک انصاف اورپیپلزپارٹی تینوں جماعتوں کی طرف سے شمولیت کی پیشکش ہوئی اورمجھے ٹکٹ کی پیشکش بھی ہوئی لیکن میں نے معذرت کرلی ۔اگرکوئی مزدورں کی پارٹی بنی اورانہوں نے مجھے پیشکش کی تومیں شامل ہوجائوں گااورایک مزدورکی طرح ان کیساتھ کام کروں گا۔تعلیمی اداروں میں سیاسی پارٹیوںسے منسلک طلبہ تنظیموں پرپابندی اورغیرسیاسی سٹوڈنٹس یونین کی بحالی ہونی چاہیے۔ مزدووں کی پینشن ،اولڈایج بینیفٹ اورتنخواہوں کے حوالے سے بات کرنی چاہیے ۔پندرہ ہزارروپے میں فیملی کیسے گزاراکرسکتی ہے ۔ میں حکومت پاکستان کا شکر گذارہوں جس نے مجھے انسانی حقوق کے صدارتی ایوارڈسے نوازا۔

Most Popular