ینگ ڈاکٹروں کے احتجاج کا دائرہ ملک بھر میں پھیلتا جارہا ہے۔ پنجاب میں ڈاکٹروں سے اظہار یکجہتی کیلئے سندھ میں ینگ ڈاکٹرز نے علامتی دو گھنٹے جبکہ بلوچستان میں مکمل ہڑتال کی گئی۔

ینگ ڈاکٹروں کے احتجاج کا دائرہ ملک بھر میں پھیلتا جارہا ہے۔ پنجاب میں ڈاکٹروں سے اظہار یکجہتی کیلئے سندھ میں ینگ ڈاکٹرز نے علامتی دو گھنٹے جبکہ بلوچستان میں مکمل ہڑتال کی گئی۔

پنجاب میں ینگ ڈاکٹرزکی گرفتاریوں کے خلاف بلوچستان کے ینگ ڈاکٹروں نے کوئٹہ سمیت صوبہ بھرمیں تمام اسپتالوں کی اوپی ڈیزکوبند رکھا جس سے مریضوں کو سخت مشکلات کا سامنا کرنا پڑا۔ ینگ ڈاکٹرز بلوچستان کے رہنما ڈاکٹر عالم مینگل نے پریس کانفرنس کرتے ہوئے اعلان کیا کہ کل سے او پی ڈیز کا بائیکاٹ ختم کردیا جائیگا اور سیاہ پٹیاں باندھ کر پنجاب حکومت کیخلاف احتجاج کرینگے۔ ڈاکٹرعالم مینگل نے کہا کہ پنجاب میں خادم اعلیٰ کا نہیں ظالم اعلیٰ کا قانون ہے۔ صوبائی وزیر صحت عین اللہ شمس نے صحافیوں سے بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ ینگ ڈاکٹرزکی ہڑتال غیر قانونی ہے ضرورت پڑنے پریہاں بھی پنجاب طرزکی کارروائی کی جا سکتی ہے۔ دوسری جانب سندھ میں بھی ینگ ڈاکٹرزنے بازو پر سیاہ پٹی باندھ کراسپتالوں میں اپنے فرائض انجام دئیے اوراحتجاجاً اسپتالوں کی او پی ڈیز کودوگھنٹے کیلئے بند رکھا۔ اس موقع پرینگ ڈاکٹرزایسوسی ایشن سندھ کے نائب صدرڈاکٹرطاہرنے کہا کہ تین دن میں ڈاکٹرزکے مطالبات نہ مانے گئے تو پورے ملک میں ہڑتال کی جائے گی۔

About the author /

Waqt News

Waqt News Web Team

Most Popular