عازمین حج کی منیٰ آمد کے ساتھ ہی مناسک حج کا باقاعدہ آغاز ہوگیا ہے۔

عازمین حج کی منیٰ آمد کے ساتھ ہی مناسک حج کا باقاعدہ آغاز ہوگیا ہے۔

پاکستان سمیت دنیا بھرسےلاکھوں فرزندان اسلام فریضہ حج کی ادائیگی کے لیے منیٰ پہنچ رہے ہیں۔ سعودی عرب کے مفتی اعظم نے عازمین کو ہدایت کی ہے کہ وہ عمرے کی ادائیگی بار بار نہ کریں تاکہ سب لوگوں کو اس سعادت کا موقع مل سکے۔ منیٰ میں ایک دن قیام کے بعد حجاج کرام کل صبح میدان عرفات روانہ ہونگے جہاں حج کا رکن اعظم وقوف عرفہ ادا کیا جائے گا۔ میدان عرفات میں حج کے خطبہ کے بعد ظہراورعصرکی نمازایک ساتھ ادا کی جائیگی ۔ حجاج کرام مغرب سے پہلے میدان مزدلفہ کی طرف روانہ ہوجائینگے جہاں وہ مغرب اور عشاءکی نماز اکھٹی ادا کریں گے۔ مزدلفہ میں حجاج شیطان کو مارنے کیلئےکنکریاں جمع کریں گے۔ حجاج کرام رات مزدلفہ میں ہی گزاریں گے جہاں وہ آرام کے ساتھ ساتھ اللہ کی عبادت بھی کریں گے۔ چھ نومبر اتوار کی صبح حجاج کرام منیٰ واپس روانہ ہونگے جہاں وہ رمی جمرات کریں گے۔ شیطان کو کنکریا ں مارنے کے بعد حجاج کرام اللہ کی راہ میں جانور قربان کریں گے پھرسر منڈوا کر احرام کھو ل کر عام لباس پہنیں گے اورمزید دو روز تک منیٰ میں ہی قیام کریں گے۔ سعودی حکومت کی جانب سے حج کیلئے خصوصی انتظامات کئے گئے ہیں اور ولی عہد شہزادہ نائف نے خود انتظامات کا جائزہ لیا۔

About the author /

Waqt News

Waqt News Web Team

Most Popular