صدر مملکت ممنون حسین نے کہا ہے کہ پاکستان پڑوسی خصوصاًٰ اسلامی ممالک کے ساتھ برادرانہ تعلقات کا خواہاں ہے، ہمیں وسائل اور توانائیاں غیروں کے لئے نہیں اپنے خطے اور عوام کے لئے استعمال کرنی چاہئیں۔

صدر مملکت ممنون حسین نے کہا ہے کہ پاکستان پڑوسی خصوصاًٰ اسلامی ممالک کے ساتھ برادرانہ تعلقات کا خواہاں ہے، ہمیں وسائل اور توانائیاں غیروں کے لئے نہیں اپنے خطے اور عوام کے لئے استعمال کرنی چاہئیں۔

ایوان صدر اسلام آباد میں صدر ممنون حسین سے تاجکستان کے وزیر خارجہ اسلوف سراج الدین نے ملاقات کی۔ جس میں انفراسٹرکچر، روڈ لنک اور شنگھائی تعاون تنظیم سے متعلق تعاون کو مزید فروغ دینے پر اتفاق کیا گیا۔ اس موقع پر گفتگو کرتے ہوئے صدر مملکت کا کہنا تھا کہ پاکستان تاجکستان کے ساتھ تعلقات کو اہمیت دیتا ہے، خارجہ پالیسی میں بھی تاجکستان کو خاص مقام حاصل ہے۔ صدر ممنون حسین کا کہنا تھا کہ پاکستان پڑوسی خصوصاًٰ اسلامی ممالک کے ساتھ برادرانہ تعلقات کا خواہاں ہے، کاسا ون تھاؤزنڈ 1000 معاہدہ پاکستان، افغانستان اور تاجکستان سمیت پورے خطے کے مفاد میں ہے۔ ہمیں وسائل اور توانائیاں غیروں کے لئے نہیں اپنے خطے اور عوام کے لئے استعمال کرنی چاہئیں۔ انہوں نے تاجکستان کے صدر کو دورہ پاکستان کی دعوت بھی دی، اس موقع پر تاجک وزیر خارجہ کا کہنا تھا کہ تاجکستان ٹرانسٹ ٹریڈ کے ذریعے پاکستان سے مزید تعاون کا خواہش مند ہے۔

About the author /

Waqt News

Waqt News Web Team

Most Popular