لاہور کے مقامی ہوٹل میں شوکت خانم ہسپتال کے عالمی سمپوزیم میں زبردستی داخل ہونے پر ہوٹل انتظامیہ اور ینگ ڈاکٹرز کے درمیان ہاتھا پائی ہو گئی۔

لاہور کے مقامی ہوٹل میں شوکت خانم ہسپتال کے عالمی سمپوزیم میں زبردستی داخل ہونے پر ہوٹل انتظامیہ اور ینگ ڈاکٹرز کے درمیان ہاتھا پائی ہو گئی۔

لاہورکے مقامی ہوٹل میں شوکت خانم ہسپتال کے زیر اہتمام عالمی سیمینار جاری تھا کہ ہوٹل کے باہر احتجاج کرنے والے شوکت خانم سے برطرف گیارہ ڈاکٹرز نے سیمینار میں زبردستی داخل ہونے کی کوشش کیہوٹل انتظامیہ نے جب انہیں روکنے کی کوشش کی تو بات ہاتھا پائی تک جاپہنچیایک دوسرے پر مکے گھونسے اور تھپڑوں کی بارش کے نتیجے میں ینگ ڈاکٹرز کے عہدے داروں سمیت چار ڈاکٹرز شدید زخمی ہو گئے جس کے بعد ہوٹل انتظامیہ نے پولیس طلب کرلی اور گیٹ بند کردیئے بعدازاں وائی ڈی اے نے ہوٹل کے باہراحتجاجی مظاہرہ کرتے ہوئے شوکت خانم کے برطرف ڈاکٹروں کوبحال کرنے اور شوکت خانم انتظامیہ کوبرطرف کرنے کا مطالبہ کیا ینگ ڈاکٹرز ایسوسی ایشن کے عہدیداروں کا کہنا تھا کہ وائی ڈی اے تشدد کرنے والے افراد کے خلاف مقدمہ درج کرائے گی،

About the author /

Waqt News

Waqt News Web Team

Most Popular