پی ٹی وی پر حملہ: عمران خان اور عارف علوی کے درمیان ٹیلی فونک گفتگو منظر عام پر آ گئی

پی ٹی وی پر حملہ:  عمران خان اور عارف علوی کے درمیان ٹیلی فونک گفتگو منظر عام پر آ گئی

اسلام آباد میں تحریک انصاف کے دھرنے کے دوران پی ٹی وی پر حملے کے موقع پر تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان اور رہنما عارف علوی کے درمیان ٹیلی فونک گفتگو منظر عام پر آ گئی ہے ۔ آڈیو ٹیپ پی ٹی وی پر حملے کے بعد کی ہے جس میں عارف علوی عمران خان کو بتاتے ہیں کہ لوگ پی ٹی وی میں گھس گئے ہیں اور نشریات بند ہو گئی ہے۔۔۔ اس پر عمران خان کہتے ہیں اچھا ہے ،، اچھا ہے،، حکومت پر دباؤ بڑھے گا تو نواز شریف استعفیٰ دیں گے۔ تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان نے دبے لفظوں میں ٹیلی فون ٹیپ والی گفتگو کا اعتراف کرلیا، عمران خان کا کہنا ہے کہ کسی کافون ٹیپ کرنا جرم ہے، پہلے مجرم کو پکڑا جائے- لاہور میں میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے عمران خان نے کہا کہ انہوں نے ابھی تک ٹیپ کی گئی گفتگو نہیں سنی ۔ تاہم اگر ایسا ہوا بھی تو کوئی ایسی بات نہیں کی ہو گی جس سے ملک دشمنی ثابت ہو ۔ چیئرمین تحریک انصاف نے کہا کہ کسی کی گفتگو ٹیپ کرنا سنگین جرم ہے ۔ پہلے واضح کیا جائے کہ ٹیپ کس نے کی ہے ۔پہلے ٹیپ کرنے والے مجرم کو پکڑا جائے ۔ عمران خان کا کہنا تھا کہ ٹیپ کرنا کوئی مشکل کام نہیں اگر وہ چاہیں تو نواز شریف کے گانوں کی ٹیپ چلا سکتے ہیں ۔ عمران خان الطاف حسین کو بھی آڑے ہاتھوں لیا۔ انہوں نے کہا کہ ٹیپ کی گفتگو میں یہ نہیں کہا ہوگا کہ بوریوں میں لاش بھیجو اور لندن میں بھتہ بھیجو

About the author /

Waqt News

Waqt News Web Team

Most Popular