برطانیہ میں دہشتگردی کے سائے نہ چھٹ سکے

برطانیہ میں دہشتگردی کے سائے نہ چھٹ سکے

برطانیہ میں دہشتگردی کے سائے نہ چھٹ سکے ،، لندن میں دہشتگردی کے دو مختلف واقعات میں سات افراد ہلاک جبکہ تیس زخمی ہو گئے ،، پولیس نے تینوں مشتبہ حملہ آوروں کو ہلاک کر دیا ،، لندن بریجبرطانیہ ایک بار پھر دہشتگردی کی لپیٹ میں آ گیا ،، اس بار دہشتگردی کے دو مختلف واقعات ہوئے ،، پہلے واقعے میں لندن برج پر موجود لوگوں کو وین سے کچلا گیا ،، جس کے بعد اس میں سے تین چاقوؤں سے مسلح افراد نے بورو مارکیٹ میں حملہ کیا ،، پولیس کا کہنا ہے کہ ان مشتبہ افراد کو 10 بج کر آٹھ منٹ پر ملنے والی پہلی مدد کی کال کے آٹھ منٹ کے بعد ہی مار دیا گیا تھا،،، ان افراد نے جعلی خود کش جیکٹس پہنی ہوئی تھیں۔ جبکہ تاحال ان افراد کی شناخت ظاہر نہیں کی گئی۔ پولیس کی جانب سے ان دو واقعات کو دہشت گردی کے واقعات قرار دیا گیا ہے ،، واقعے کے بعد دریائے تھیمز کو بھی بند کر دیا گیا تھا۔ تاہم انتظامیہ نے اسے دوبارہ کھولتے ہوئے ان لوگوں کا شکریہ ادا کیا ،،جنھوں نے کشتیوں پر ہونے والی تقریبات کو منسوخ کرتے ہوئے فوری طور پر علاقہ خالی کر دیا تھا،،، میٹرو پولیس کا کہنا ہے کہ وہ اس واقعے کی تحقیقات کر رہی ہے،، جبکہ جائے وقوعہ کے ارد گرد کے علاقوں سے مشتبہ افراد کی تلاشی لی جا رہی ہے،، لندن کی ایمبسولینس سروس نے اپنے ٹوئٹر اکاؤنٹ پر پیغام میں بتایا کہ ان کی پہلی ترجیح زخمیوں کو طبی امداد فراہم کرنا تھا اور اس بات کو یقینی بنانا تھا کہ شدید زخمیوں کو پہلے امداد ملے اور وہ ہسپتال پہنچائے جائیں،،،واقعے کے بعد لندن برج کو بھی رات بھر بند رکھا گیا جبکہ اس پر چلنے والی ٹرانسپورٹ کو متبادل راستے فراہم کیے گئے ،، پولیس کے مطابق واقعے کی تحقیقات مکمل ہوتے ہی حملہ آوروں کی شناخت ظاہر کر دی جائیگی ،، پر وین سے راہگیروں کو کچلا گیا ،، جبکہ بورو مارکیٹ میں لوگوں پر چاقو سے وار کیے گئے ،،

Most Popular