یمن: حوثی باغیوں اور صالح کے حامیوں میں جھڑپیں،100افراد ہلاک

یمن: حوثی باغیوں اور صالح کے حامیوں میں جھڑپیں،100افراد ہلاک

یمن میں معزول صدر علی عبداللہ الصالح کے حامیوں اور حوثی باغیوں کے درمیان جھڑپوں میں ایک سو سے زائد افراد ہلاک ہوگئے اور باغیوں نے دو سو قیدیوں کو مار دیا ہے۔ یمنی صدر عبد ربو منصور ہادی نے کہاہے کہ علی عبداللہ کے قتل کے بعد تمام جماعتوں کو حوثیوں کے خلاف متحدہ ہونا ہوگا۔ ٹی وی کے مطابق میں ایک سو سے زائد افراد یمن کے دارالحکومت صنعا میں معزول صدر علی عبداللہ صالح اور حوثیوں باغیوں کے درمیان لڑائی میں مارے گئے۔معزول صدر علی عبداللہ الصالح کو جھڑپوں میں مارنے کے بعد حوثی باغیوں نے اپنی جیلوں میں قید دوسو سے زائد قیدیوں کو قتل کردیا۔یمن کے آئینی صدر عبد ربو منصور ہادی نے ٹی وی پر قوم سے خطاب میں کہا معزول صدر علی عبداللہ صالح کو قتل کرنا جرم ہے۔ تمام جماعتوں کو متحد ہوکر دشمن حوثی باغیوں کے خلاف لڑنا ہوگا۔عبد ربو کا کہنا تھاالصالح کا قتل بہت بڑا جرم ہے اور حوثیوں کو اس کا جواب دینا ہوگا۔اس سے پہلے حوثیوں کے رہنما عبدالماک حوثی نے کہاکہ علی عبداللہ صالح کا قتل تاریخی کامیابی ہے۔حوثیوں سے اتحاد توڑنے پر علی عبداللہ ہادی موت کے حقدار تھے۔

Most Popular