ترک دارالحکومت انقرہ میں خودکش کار بم دھماکے ,ہلاکتوں کی تعداد سینتیس ہوگئی,ایک سو پچیس افراد زخمی,وزیراعظم احمد داؤد اوغلو کا دہشتگرد حملے کا الزام کُرد باغیوں اور شامی جنگجوؤں پر عائد

ترک دارالحکومت انقرہ میں خودکش کار بم دھماکے ,ہلاکتوں کی تعداد سینتیس ہوگئی,ایک سو پچیس افراد زخمی,وزیراعظم احمد داؤد اوغلو  کا دہشتگرد حملے کا الزام کُرد باغیوں اور شامی جنگجوؤں پر عائد

ترکی کے وزیراعظم احمد داؤد اوغلو نے انقرہ میں ہونے والے دہشتگرد حملے کا الزام کرد باغیوں اور شامی جنگجوؤں پر عائد کیا ہے، ان کا کہنا تھا کہ حملے میں ملوث ایک شامی بمبار کی شناخت صالح نجار کے نام سے کی گئی ہے، جبکہ دوسرے حملہ آوور کے بارے میں کہا جارہا ہے کہ وہ ایک طالبہ تھی،گزشتہ شب ایک خودکش حملہ آوور نے بارود سے بھری گاڑی کو شہر کے مصروف ترین مقام پر لاکر دھماکے سے اڑا دیا، جس کے نتیجے میں سینتیس افراد ہلاک اور ایک سو پچیس زخمی ہوگئے تھے، صدر رجب طیب اردگان نے دھماکے پر شدید ردعمل کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ ان کا ملک دہشت گردوں کے خلاف جنگ کو جاری رکھتے ہوئے انہیں جھکنے پر مجبور کردے گا. اس دھماکے کے بعد ترک جنگی طیاروں نے ملک کے شمال مغربی علاقے میں کُرد باغیوں کے خلاف کارروائی تیز کردی ہے، نئے حملوں میں باغیوں کے اٹھارہ ٹھکانوں کو نشانہ بنایا گیا ہے۔

Most Popular