داعش کے جنگجوؤں نے دنیا کے خوبصورت ترین سیاحتی مقام پیرس کو خون میں نہلا دیا

داعش کے جنگجوؤں نے دنیا کے خوبصورت ترین سیاحتی مقام پیرس کو خون میں نہلا دیا

فرانسیسی میڈیا کے مطابق پیرس میں پہلا خودکش دھماکا اس وقت ہوا جب نیشنل سٹیڈیم میں فرانس اور جرمنی کی ٹیموں کے درمیان فٹبال میچ کھیلا جارہا تھا سٹیڈیم میں فرانسیسی صدر فرانسسواں اولاند بھی اپنی کابینہ کے ہمراہ موجود تھے،سیکیورٹی حکام نے صدر اور انکی کابینہ کو حفاظتی حصار میں لے کر اسٹیڈیم سے محفوظ مقام پرمنقتل کردیا،،پہلے حملے کے کچھ دیر بعد یکے بعد دیگرے دو مزید دھماکے ہوئے جس سے صورتحال مزید سنگین ہوگئی، گاڑیوں میں سوار نقاب پوش دہشتگردوں نے بارز اور ہوٹلوں میں موجود شہریوں پر اندھا دھند گولیاں برسائیں،،فائرنگ اور دھماکوں کے بعد دہشت گردوں نے علاقے میں واقع بٹاکلان کنسرٹ ہال میں داخل ہوکر سو سے زائد افراد کو یرغمال بنا لیا،، پولیس کی جانب سے ریسکیو آپریشن تو کیا گیا تاہم حملہ آوروں نے تمام یرغمالیوں کو فائرنگ اور گرنیڈ پھینک کر ہلاک کردیا،، اس دوران علاقہ میدان دھماکوں سے گونجتا رہا،دہشتگردوں کے حملوں کے بعد پیرس کے تمام ہسپتالوں میں ایمرجنسی نافذ کردی گئی، جبکہفوج اور پولیس نے فوری طور پر شہر کو گھیرے میں لے کر کرفیو نافذ کردیا،، اور فرانس سے متصل تمام سرحدوں کو بھی سیل کردیا گیا،سیکیورٹی حکام کے مطابق دہشتگردوں کے خلاف کارروائی کے دوران چار دہشتگرد بٹاکلان کنسرٹ ہال، تین نیشنل سٹیڈیم کے قریب اور ایک مشرقی پیرس گلی میں مارا گیا جبکہ ایک کو زخمی حالت میں گرفتار کیا گیا،، جس نے داعش سے وابستگی کا اعتراف کیا

Most Popular