صدر آزاد کشمیر کی یورپی یونین سے کشمیریوں کے خلاف بھارتی بربریت اور ظلم کی روک تھام سے متعلق کردار ادا کرنے کی اپیل

صدر آزاد کشمیر کی یورپی یونین سے کشمیریوں کے خلاف بھارتی بربریت اور ظلم کی روک تھام سے متعلق کردار ادا کرنے کی اپیل

اسپین (صاحبزادہ عتیق سے ) صدر آزاد کشمیر سردار مسعود خان آج کل یورپ کے دورے پہ ہیں وہ مغربی ممالک کی توجہ بھارتی مظالم کی جانب مبذول کرانے اور ان کی حمایت حاصل کرنے کی کوششوں میں مصروف ہیں ، اس دورہ کی دوران اسپین کے دارلحکونت میڈرڈ میں ان کی اہم ملاقاتیں ہوئیں رائل الکانوانسٹیٹیوٹ میں زندگی کے تمام شعبوں سے تعلق رکھنے والے لوگ موجود تھے خا ص طور پر جن لوگوں کو خارجہ پالیسی ، کشمیر اور ساؤتھ ایشیا کی سیکیورٹی سے متعلق جن کی دلچسپی ہے - ان کا یہ تجسس تھا کہ مسئلہ کشمیر کو حل کیئے بغیر جنوبی ایشیا میں امن نہیں ہو سکتاصدرآزاد کشمیر نے اپیل کی کہ یورپین پارلیمنٹ کے مختلف ممالک ارکان ان کی مدد کریں ۔ صدر آزاد کشمیر نے کہا کہ
آپ لوگ انسانی حقوق کے محافظ ہیں اور ہم یہ کوشش کر رہے ہیں کے اقوام متحدہ اس معاملے میں متحرک ہو اور یورپی کمیونٹی ہماری مدد کرے- اقوام متحدہ سلامتی کونسل کی قرارداد وں پر عملدرآمد کرائے اور کشمیر میں جو بربریت جاری ہے اسکو ختم کیا جا سکے۔ صدر سردار مسعود خان نےکہا کہ آپ بھارت سے معاشی تعلقات کی وجہ سے کشمیر یوں پر ان کے ظلم کے بارے میں خاموش نہ ہوں بلکہ آپ بھی اپنی آواز بلند کریں ۔ تاکہ کشمیری قوم کو انصاف اور آزادی مل سکے۔ اس کے علاوہ اہم ملاقات سوشلسٹ پارٹی کے رہنما آسکر لوپیز سے ہوئی جو پارٹی ترجمان بھی ہیں ان کا کہنا تھا کہ کشمیر کی موجودہ صورتحال پر انہیں آگاہی اور تشویش ہے اور وہ چاہتے ہیں کہ یورپی یونین اور اسپین کے لوگ اس سلسلے میں کردار ادا کریں ۔ انہوں نے کہا کہ یہاں پر پاکستان اور کشمیر کی کمیونٹی بہت متحرک ہے اور کشمیر کے متعلق اپنا نقطہ نظر پیش کرنے میں جھجک محسوس نہیں کرتے ۔ یہاں تارکین وطن ہر شعبے میں اپنا اثرورسوخ رکھے ہوئے ہیں۔اس ملاقات کا اہتمام پاکستانی نژادامیدوار صوبائی اسمبلی حافظ عبدلرزاق نے کیا تھا جس میں پاکستانی سفیر رفعت مہدی اور امتیاز فیروز گوندل بھی معاونت کے لئے موجود تھے ۔
صدر آزاد کشمیر نے کشمیریوں کے خلاف جو جرائم بھارت کر رہا اس کی روک تھام سے متعلق کردار ادا کرنے کی اپیل کی کہ وہ اپنی پارلیمنٹ میں اس سے متعلق سوال اٹھائیں ، بحث کریں اور آپس میں اتفاق رائے پیدا کریں۔اوسکر لوپیس نے یقین دلایا کہ ان کی پارٹی اسمبلی میں انسانی حقوق کی خلاف ورزیوں کے خلاف قرارداد پیش کرے گی ۔ آخر میں صدر آزاد کشمیر نے سپانش سینیٹر کو کشمیری شال تحفہ دی ۔

Most Popular