ہلیری کلنٹن کی ٹرمپ کے خلاف نئی سیاسی تحریک

ہلیری کلنٹن کی ٹرمپ کے خلاف نئی سیاسی تحریک

امریکا کی سابق وزیر خارجہ اور سابق صدارتی امیدوار ہلیری کلنٹن نے ملک میں ایک نئی باضابطہ سیاسی تحریک ”اون ورڈ ٹوگیدر“(مل کر آگے بڑھنا) شروع کر دی ہے۔ ”اون ورڈ ٹوگیدر“ کا مقصد لوگوں کو سیاسی عمل میں شرکت پر آمادہ کرنے والے گروپس کی حمایت ہے۔مغربی خبر رساں اداروںکے مطابق ہیلری کلنٹن کی سیاسی تحریک امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کی انتظامیہ کی مخالفت کرنے والوں کی بھی حوصلہ افزائی کرے گی۔ ہیلری کلنٹن کا یہ اعلان گزشتہ برس نومبر میں ہونے والے صدارتی انتخابات میں ڈونلڈ ٹرمپ سے شکست کے بعد ایک بار پھر ان کا سیاسی منظر پر نمایاں ہونے کا سبب بنا ہے۔اس خبر کے اعلان کے لیے مختلف ٹویٹر پیغامات میں ڈیموکریٹک پارٹی کی طرف سے سابق صدارتی امیدوار ہلیری کلنٹن کا کہنا تھاکہ وہ سمجھتی ہیں کہ لوگوں کی شمولیت ہماری جمہوریت کے لیے انتہائی اہم ہے۔ ہلیری کلنٹن نے خاص طور پر پانچ گروپوں کا ذکر کیا جنہیں یہ نئی تحریک تعاون فراہم کرے گی۔ ان میں ”انڈیوزیبل“ نامی گروپ بھی شامل ہے جس کا اعلانیہ مقصد ٹرمپ کے خلاف مزاحمت کرنا ہے۔ اس کے علاوہ نسلی انصاف کے لیے کام کرنے والی تنظیم ”کلر فار چینج“ اور ڈیموکریٹک پارٹی کا خواتین کی تربیت کا ایک صف اول کا پروگرام ”ایمَرج امریکا“ بھی شامل ہے۔ نوجوان لوگوں کو دفاتر چلانے کی تربیت اور مدد فراہم کرنے والا گروپ ”رَن فار سم تھِنگ“ اور ”س±وئنگ لیفٹ“ نامی تحریک جو 2018ءمیں امریکا میں ہونے والے وسط مدتی انتخابات میں ڈیموکریٹک پارٹی کی ایوان نمائندگان میں اکثریت حاصل کرنے کے لیے کوشاں ہے، ہلیری کلنٹن کی اس سیاسی تحریک سے براہ راست سپورٹ حاصل کرے گی۔ کلنٹن کے مطابق بعض معاملات میں ان تنظیموں کو براہ راست فنڈنگ بھی فراہم کی جائے گی۔ذرائع کے مطابق ”اون ورڈ ٹوگیدر“ کو ایک سوشل ویلفیئر، نان پرافٹ تنظیم کے طور پر رجسٹر کرایا گیا ہے، جس کا مطلب ہے کہ یہ تنظیم ڈونرز کے نام آشکار کیے بغیر کسی سے بھی فنڈنگ حاصل کر سکتی ہے۔

Most Popular