افغانستان کے مسئلے کا حل فوجی نہیں سیاسی استحکام اور مذاکرات ہیں:اعزاز چودھری

 افغانستان کے مسئلے کا حل فوجی نہیں سیاسی استحکام اور مذاکرات ہیں:اعزاز چودھری

واشنگٹن میں غیرملکی میڈیا کے نمائندوں سے گفتگو کرتے ہوئے اعزاز چودھری کا کہنا تھا کہ پاکستان اور افغانستان کے تعلقات انتہائی اہمیت کے حامل ہیں، مستحکم افغانستان خطے کے مفاد میں ہے ، ان کا کہنا تھا کہ افغانستان میں عدم استحکام پاکستان سمیت پورے خطے پر اثر انداز ہوتا ہے افغانستان کے مسئلے کا حل فوجی نہیں سیاسی استحکام اور مذاکرات ہیں،،پاک بھارت تعلقات پر بات کرتے ہوئے اعزاز چودھری کا کہنا تھا کہ پاکستان اپنے تمام ہمسایہ ممالک کے ساتھ پرامن تعلقات چاہتا ہے، پاکستان اور بھارت کو خطے کی سلامتی کے پیش نظر بامعنی مذاکرات کرنے ہوں گے۔ بامعنی مذاکرات سے ہی خطے میں امن واستحکام ممکن ہوگا۔۔۔ ہر بار پاک بھارت مذاکرات کے تعطل کا فائدہ انتہا پسند اور دہشت گرد فائدہ اٹھاتے ہیں۔ پاکستانی سفیر کا کہنا تھا کہ حکومت پاکستان سیکیورٹی فورسز اور عوام دہشت گردی کے خاتمے کیلئے پر عزم ہیں۔ ضرب عضب پر تمام اسٹیک ہولڈرز کو اعتماد میں لیا گیا تھا۔ آپریشن ردالفساد دہشت گردوں کی باقیات کے خاتمے کیلئے شروع کیا گیا۔ جو ان کے مکمل خاتمے تک جاری رہے گا۔ اعزاز چودھری کا کہنا تھا کہ پاکستان میں تمام معاشی اعشاریے بلندی کی جانب گامزن ہیں اور پاکستان دنیا میں ابھرتی ہوئی حقیقت کی طرح سامنے آرہا ہے۔

Most Popular