غیرملکی خبررساں: عراقی فوج کے ایک کرنل کریم الامی کا کہنا تھا کہ العبادیہ میں داعش کے پہلے دفاعی حصار کو توڑنا ایسے ہی ہے جیسے دوزخ کے دروازے کھولنا ہے

غیرملکی خبررساں: عراقی فوج کے ایک کرنل کریم الامی کا کہنا تھا کہ العبادیہ میں داعش کے پہلے دفاعی حصار کو توڑنا ایسے ہی ہے جیسے دوزخ کے دروازے کھولنا ہے

غیرملکی خبررساں ادارے روئیٹرز سے بات چیت کرتے ہوئے عراقی فوج کے ایک کرنل کریم الامی کا کہنا تھا کہ العبادیہ میں داعش کے پہلے دفاعی حصار کو توڑنا ایسے ہی ہے جیسے دوزخ کے دروازے کھولنا ہے، عراقی فورسز نے حال ہی میں شمال مغربی عراقی شہر تلعفر کے زیادہ تر حصے کا کنٹرول حاصل کیا ہے، جو طویل عرصے سے داعش کا ایک مضبوط گڑھ چلا آ رہا تھا، مکمل فتح کے اعلان کے لئے شہر کے شمال مغرب میں سات میل کے فاصلے پر واقع العبادیہ پر قبضہ کرنا ضروری ہے، شديد مزاحمت کی وجہ سے عراقی فورسز کو نہ صرف انفرادی قوت بڑھانا پڑی بلکہ امریکی فضائیہ کی بمباری میں بھی اضافہ کرانا پڑا ہے، ایک اندازے کے مطابق العبادیہ میں دو ہزار کے لگ بھگ جنگجو موجود ہیں، جبکہ تقریباً پچاس ہزار سرکاری فوجیوں نے انہیں محاصرے میں لے رکھا ہے،کرنل لامی کا کہنا ہے کہ داعش کے جنگجوؤں نے قصبے کے تقریباً ہر گھر میں مورچے بنا رکھے ہیں، وہ گھروں کے اندر سے مارٹر گولے اور ٹینک شکن میزائل داغ رہے ہیں 

Most Popular