سمندری طوفان ہاروی کے بعد ہوسٹن میں چوری اور ڈکیتی کے واقعات میں اضافہ

سمندری طوفان ہاروی کے بعد ہوسٹن میں چوری اور ڈکیتی کے واقعات میں اضافہ

امریکی ریاست ٹیکساس کے شہر ہوسٹن میں سمندری طوفان ہاروی سے آنے والی تباہی کے بعد انتظامیہ نے شہر میں رات کے اوقات میں کرفیو نافذ کرنے کا اعلان کیا ہے۔برطانوی نشریاتی ادارے مطابق طوفان کے باعث گذشتہ جمعہ سے جاری بارشوں کی وجہ سے شہر کے بیشتر حصے زیر آب آگئے ہیں اور اب تک 15اموات ہو چکی ہیں۔ہوسٹن شہر کے میئر سلوسٹر ٹرنر نے کرفیو لگانے بارے کہا کہ یہ فیصلہ بارشوں کے بعد بڑھتی ہوئی چوری اور لوٹ مار کو روکنے کے لیے کیا گیا ہے۔مقامی وقت کے مطابق یہ کرفیو رات بارہ بجے سے لے کر صبح پانچ بجے تک نافذ ہوگا اور اس پر عملدرآمد غیر معینہ مدت کے لیے جاری رہے گا۔ امدادی کارکنان اور نوکری پیشہ افراد اس کرفیو سے مستشنی ہوں گے۔میئر ٹرنر نے کہا کہ کرفیو کی مدد سے وہ بڑھتے ہوئے چوری کے واقعات پر قابو پانے کی کوشش کریں گے۔ امریکی ریاست ٹیکساس کے شہر ہوسٹن میں سمندری طوفان کے بعد دو بڑے آبی ذخائر میں پانی کی سطح بلند ہونے کے بعد طغیانی آ گئی ہے۔سمندری طوفان کے بعد شدید بارشوں سے ڈیموں میں پانی انتہائی سطح سے اوپر آ گیا ہے۔فلڈ کنٹرول آفیسر کا کہنا ہے کہ ڈیموں سے پانی کے اخراج کے سبب قریبی آبادیوں میں سیلابی پانی میں اضافہ ہو سکتا ہے۔تکنیکی ماہرین ڈیم میں پانی کی سطح کم کرنے میں مصروف ہیں لیکن ہوسٹن کے مغرب میں واقعے ایڈک ڈیم میں پانی کی سطح 108 فٹ تک پہنچ گئی ہے۔فلڈ کنٹرول سینٹر سے وابستہ ماہر موسمیات جیف لینڈر کا کہنا ہے کہ 'ہم نے پہلے کبھی ان حالات کا سامنا نہیں کیا ہے اس لیے ہم حالات پر قابو پانے کی کوشش کر رہے ہیں۔'ڈیموں میں پانی کی سطح بلند ہونے کے بعد امریکا کے چوتھے بڑے شہر ہوسٹن میں سیلابی ریلے کے سبب 3 ہزار سے زیادہ مکانات پانی میں بہہ گئے ہیں۔ شہر کے میئر کا کہنا ہے کہ ڈیم سے پانی کے اخراج کے بعد مزید دس ہزار افراد کو ہنگامی پناہ دینے کے لیے وفاق سے مدد مانگی ہے۔

Most Popular