آرمی چیف جنرل راحیل شریف سے امریکی سینیٹر جان مکین نے اپنے وفد کے ہمراہ اور نمائندہ خصوصی رچرڈ اولسن نے الگ الگ ملاقاتیں کیں

آرمی چیف جنرل راحیل شریف سے امریکی سینیٹر جان مکین نے اپنے وفد کے ہمراہ اور نمائندہ خصوصی رچرڈ اولسن نے الگ الگ ملاقاتیں کیں

آئی ایس پی آر کے مطابق آرمی چیف جنرل راحیل شریف سے چیئرمین امریکی سینیٹ آرمز سروسز کمیٹی جان مکین نے ملاقات کی۔ جان مکین کے وفد میں امریکی سینیٹر لِنڈسے گراہم اور سینیٹر جو ڈونیلی بھی شامل تھے۔ ملاقات میں باہمی دلچسپی کے امور اور افغانستان کی صورتحال سمیت علاقائی سکیورٹی پر تبادلہ خیال کیا گیا۔ اس موقع پر آرمی چیف نے پاکستان کو درپیش مسائل، خطے کے استحکام اور عالمی امن کے لئے پاکستان کے کردار پر بات کی۔ ملاقات میں دہشتگردی کے خلاف جنگ میں پاکستان کی کامیابیوں پر بھی گفتگو کی گئی جبکہ پاک افغانستان سرحد پر غیر قانونی نقل و حرکت روکنے کے لئے موثر بارڈر مینجمنٹ پر بھی زور دیا گیا۔ جنرل راحیل شریف نے کہا کہ مستحکم افغانستان پاکستان کے مفاد میں ہے جبکہ دونوں ممالک کے درمیان تعلقات علاقائی امن اور سکیورٹی کے ضامن ہیں۔ سینیٹر جان مکین نے آپریشن ضرب عضب میں پاکستان کی کامیابیوں کو سراہا۔ انہوں نے کہا کہ انسداد دہشتگردی آپریشنزمیں پاک فوج کی کامیابیاں غیر معمولی ہیں اور اس سے دہشتگردی کےخاتمےکیلئے پاکستان کےعزم کی عکاسی ہوتی ہے۔ جان مکین نے کہا کہ پاکستان اور امریکا کو ہر سطح پر اپنے تعلقات مضبوط کرنے کی ضرورت ہے تاکہ خطے کے امن کے ثمرات کا زیادہ سے زیادہ فائدہ اٹھایا جاسکے۔ اس سے قبل آرمی چیف سے امریکی نمائندہ خصوصی رچرڈ اولسن نے بھی ملاقات کی۔ ملاقات کے دوران علاقائی سکیورٹی بالخصوص افغانستان سے متعلق امور پر تبادلہ خیال کیا گیا۔

Most Popular