چیئرمین نیب کی تقرری کا طریقہ کارسپریم کورٹ میں چیلنج

چیئرمین نیب کی تقرری کا طریقہ کارسپریم کورٹ میں چیلنج

سپریم کورٹ میں دائرد درخواست میں موقف اختیار کیا گیا ہے کہ موجودہ چیئرمین نیب کی تقرری وزیراعظم اور اپوزیشن لیڈر کی مشاورت سےہوئی۔ چیئرمین نیب کی تقرری سپریم کورٹ اور ہائیکورٹ کے سینیئر ججز کی مشاورت سے کی جائے۔ قانون کے مطابق چیئرمین نیب کی تقرری چیف جسٹس کی مشاورت سے ہونی چاہیے۔ سابق صدر پرویزمشرف نے نومبر دوہزار دو میں آرڈیننس کے ذریعے قانون میں ترمیم کی۔ آرڈیننس کی مدت چار ماہ سے زائد نہیں ہو سکتی ۔ پرویز مشرف کے جاری کیے گئے آرڈینس پر آج بھی عمل کیا جارہا ہے۔ درخواست میں مزید کہا گیا ہے کہ سولہ نومبر دو ہزارد دو میں دستور کا نفاذ ہو چکا تھا۔ پرویز مشرف کے پاس نومبر دوہزار دو میں آرڈینس جاری کرنے کا اختیار نہیں تھا۔ نیب کا دو ہزار سن میں بنایا گیا قانون فعال ہے۔ اس قانون کے تحت چیئرمین نیب کا تقررچیف جسٹس کی سفارش سے ہونا چاہیے۔ درخواست میں استدعا کی گئی ہے کہ نئے چیئرمین نیب کی تقرری کیلئےاخبارات میں اشتہارات دییے جائیں ۔

Most Popular