سرحدوں پر کشیدگی کا ذمہ دار بھارت ہے، سندھ طاس معاہدہ خطرات سے دوچار ہے:وزیر خارجہ خواجہ محمد آصف

 سرحدوں پر کشیدگی کا ذمہ دار بھارت ہے، سندھ طاس معاہدہ خطرات سے دوچار ہے:وزیر خارجہ خواجہ محمد آصف


سیالکوٹ میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے وزیر خارجہ خواجہ آصف نے کہا کہ گزستہ 57 سال سے سندھ طاس معاہدہ میں مشکلا ت آرہی ہیں ۔ یہ معاہدہ خطرات سے دو چار ہے جس سے برصغیر کو مشکلات کا سامنا کرنا پڑسکتا ہے، اس معاہدے پر بھارت اور دیگر ممالک خصوصا امریکہ اثر انداز ہو رہا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ چھ ماہ کے تعطل کے بعد 28تاریخ کو واشگٹن کی میٹنگ کے دوران مثبت پیش رفت ہوئی ہے ۔ اگلا مرحلہ ستمبر میں ہوگا تمام فریقین اس پر متفق ہیں یہ مسئلہ حل ہونا چاہئے۔ کشن گنگا معاملہ ڈیڑھ سال پہلے حل ہو گیا تھا، تعطل کے دوران بھارت نے تین دن میں اس کی فلنگ کر دی۔ خواجہ آصف نے کہا کہ رتلے ہائیڈرو پراجیکٹ پر پاکستان کے تین اعتراضات ہیں، کشن گنگا اور رتلےہائیڈرو دو علیحدہ علیحدہ معاملات ہیں۔ ٹریٹی پر عمل درآمد نہ ہوا تو برصغیر پر اس کے خطرناک اثرات مرتب ہوں گے۔ سرحدوں پر کشیدگی بھارت کی جانب سے حالات خراب کرنے کی سازش کا حصہ ہے۔ وزیر خارجہ کا مزید کہنا تھا کہ پاکستان نے ہمیشہ امن کی راہ کو ہموار کرنے کی کوشش کی ہے لیکن ہمیں اس پر بھارت کی جانب سے مثبت جواب نہیں ملا ۔ بھارت ایل او سی پر ہی حالات کشیدہ نہیں کر رہا بلکہ مغربی سرحد پر بھی دہشتگردی کو فروغ دے رہا ہے ۔ بھارت کی دہشت گردی کا سب سے بڑا ثبوت کلبھوشن یادیو کی گرفتاری ہے۔

Most Popular