امریکہ کی جانب سے مقبوضہ بیت المقدس کو اسرائیل کے دارالحکومت کو طور پر تسلیم کرنے پر پی ٹی آئی،پیپلزپارٹی اور جماعت اسلامی نے تحاریک جمع کرادیں

 امریکہ کی جانب سے مقبوضہ بیت المقدس کو اسرائیل کے دارالحکومت کو طور پر تسلیم کرنے پر پی ٹی آئی،پیپلزپارٹی اور جماعت اسلامی نے تحاریک جمع کرادیں

ملک بھر میں سیاسی جماعتوں نے امریکہ کی جانب سے مقبوضہ بیت المقدس کو اسرائیل کے دارالحکومت کو طور پر تسلیم کرنے پر شدید رد عمل کا اظہار کیا ہے۔ پی ٹی آئی کے رکن قومی اسمبلی ڈاکٹر عارف علوی کی جانب سے قومی اسمبلی میں باضابطہ تحریک التوا جمع کروا دی گئی۔ تحریک التوا میں کہا گیا ہے کہ ڈونلڈ ٹرمپ کا اعلان عالمی انصاف کے اصولوں اور اقوام متحدہ کی قراردادوں کی صریحاً نفی ہے۔ ٹرمپ کے اعلان سے فلسطین اور مشرق وسطیٰ میں امن کے باقی ماندہ امکانات کو شدید نقصان پہنچے گا۔ جماعت اسلامی کی جانب سے جمع کرائی گئی تحریک التوا میں کہا گیا ہے کہ ڈونلڈ ٹرمپ کے اقدام سے پوری اسلامی دنیا کے جذبات مجروح ہوئے۔ امریکہ کے اس اقدام سے مسئلہ فلسطین  کے پرامن حل کی کوششوں کےلئے خطرہ پیدا ہوگیا۔ پیپلزپارٹی نے معاملہ سینیٹ میں اٹھایا ہے
سینٹر سحر کامران کی جانب سے باضابطہ قرارداد ایوان بالا میں جمع کروا دی گئی ہے۔ قرار داد میں کہا گیا ہے کہ مقدس مقامات کی حفاظت کیلئے امت مسلمہ کو کردار ادا کرنا چاہئے۔ امریکہ کی جانب سے بیت المقدس کو اسرائیل کے دارلحکومت کے طور پر تسلیم کرنے سے فلسطینی عوام پر اچھے اثرت نہیں پڑیں گے۔ ایوان کی معمول کی کارروائی معطل کی جائے اور معاملہ زیر بحث لایا جائے

Most Popular