جے آئی ٹی کی پاناما پیپرز پر رپورٹ پیش،شریف خاندان کی 3مزید آف شورکمپنیز کا انکشاف

جے آئی ٹی کی پاناما پیپرز پر رپورٹ پیش،شریف خاندان کی 3مزید آف شورکمپنیز کا انکشاف

جے آئی ٹی نے حتمی رپورٹ سپریم کورٹ میں جمع کرادی رپورٹ میں ذرائع آمدن اور جو اثاثے ظاہر کیے گئے ان میں شریف خاندان کے بیانات نہیں ملتے۔ جے آئی ٹی رپورٹ میں شریف خاندان کی 3مزید آف شورکمپنیز کا انکشاف ہوا ہے۔ الاناسروسز،لینکن ایس اے اورہلٹن انٹرنیشنل سروسزکا انکشاف۔ اس سے پہلے نیلسن، نیسکول اورکومبرگروپ نامی کمپنیزمنظرعام پرآئی تھیں۔ آف شور کمپنیزبرطانیہ میں شریف خاندان کے کاروبارسے منسلک ہیں۔ آف شورکمپنیزبرطانیہ میں موجودکمپنیوں کورقم فراہمی کیلئےاستعمال ہوتی ہیں۔ آف شور کمپنیز کے پیسے سے برطانیہ میں مہنگی ترین جائیدادیں خریدی گیئں۔ پیسہ برطانیہ،سعودی عرب،یواے ای اور پاکستان کی کمپنیوں کو بھی ملتا ہے۔ نوازشریف اور حسین نوازیہ فنڈزبطورتحفہ اور قرض وصول کرتے رہے۔ تحفے اور قرض کی وجوہات سے جے آئی ٹی کو مطمئن نہیں کیا جاسکا۔ بڑی رقوم کی قرض اور تحفےکی شکل میں بےقاعدگی سےترسیل کی گئی۔ مدعاعلیہان کی آمدنی،دولت کےظاہرکردہ ذرائع میں اہم تضاد پایاجاتاہے۔ بےقاعدہ ترسیلات لندن کی ہل میٹل کمپنی،یواےای کی کیپٹل ایف زیڈای کمپنیوں سےکی گئیں۔ بے قاعدہ ترسیلات اور قرض نوازشریف،حسین نواز اور حسن نواز کو ملا

Most Popular