وزارت ریلوے نے گزشتہ چار سال کے دوران ریلوے ٹریکس پر ہونےوالےحادثات کی رپورٹ تیار کرلی

وزارت ریلوے نے گزشتہ چار سال کے دوران ریلوے ٹریکس پر ہونےوالےحادثات کی رپورٹ تیار کرلی

ریلوے حکام کے مطابق گزشتہ چار سال کے دوران پیش آنے والے حادثات،متاثرین کی امداد اور ذمہ داران کے خلاف کارروائی سے متعلق رپورٹ تیار کرلی گئی ہے۔ سال دوہزار تیرہ سے دوہزار سولہ کے دوران پچیس بڑے حادثات رونما ہوئے جن میں متعلقہ ریلوے ملازمین قصور وار ثابت ہوئے۔ سترہ حادثات شہریوں کی غلطی کے باعث پیش آئے، حادثات میں چورانوے افراد جاں بحق اور چار سو تیرہ زخمی ہوئے۔ رپورٹ کے مطابق جن حادثات میں ریلوے ملازمین زمہ دار قرار پائے ان کے خلاف محکمانہ کارروائی بھی کی گئی۔ وزارت ریلوے نے سینتیس ملازمین کے خلاف تادیبی کارروائی کرتے ہوئے انہیں نوکری سے فارغ کیا جبکہ دیگر سزائیں اور جرمانے بھی کیے گئے۔ دستاویزات کے مطابق سال دوہزار تیرہ میں پانچ افراد جاں بحق اورپچپن زخمی ہوئے۔ جاں بحق افراد کے اہل خانہ کو مجموعی طور پر دس لاکھ اور زخمیوں کو انیس لاکھ روپے ادا کیے گئے۔ دوہزار چودہ میں ریلوے حادثات میں سترہ افراد جان سے گئے اور اسی زخمی ہوئے، جاں بحق افراد کے ورثا کو نوے لاکھ اور زخمیوں کو ترپن لاکھ روپے ادا کیے گئے۔ دوہزار پندرہ میں اڑتیس افراد لقمہ اجل بنے جبکہ ایک سو اکاون زخمی ہوئے۔ جاں بحق ہونے والوں کے ورثا کو تین کروڑ چار لاکھ اور زخمیوں کو چھیاسی لاکھ پینتالیس ہزار روپے ادا کیے گئے۔ دستاویزات کے مطابق گزشتہ سال چونتیس افراد ریلوے حادثات میں مارے گئے اور ایک سو ستائیس زخمی ہوئے۔ جاں بحق افراد کے اہل خانہ میں دو کروڑ پندرہ لاکھ اور زخمیوں میں اڑتیس لاکھ روپے تقسیم کیے گئے، دوسری جانب حادثات میں مرنے والے سینتالیس افراد کے ورثا تاحال ریلوے کی جانب سے امداد کے منتظر ہیں۔

Most Popular