لاہور ہائیکورٹ نے شریف فیملی کی ملکیتی تین شوگر ملوں کی منتقلی کو غیر قانونی قرار دے دیا

لاہور ہائیکورٹ نے شریف فیملی کی ملکیتی تین شوگر ملوں کی منتقلی کو غیر قانونی قرار دے دیا

چیف جسٹس لاہور ہائیکورٹ جسٹس منصور علی شاہ کی سربراہی میں دو رکنی بنچ نے شریف فیلمی کی ملکیتی شوگر ملز کی منتقلی کے معاملے پر فیصلہ سنایا اور اتفاق شوگر ملز، حسیب وقاص اور چوھدری شوگر ملز منتقلی کو غیر قانونی قرار دے دیا،تحریک انصاف کے جہانگیر ترین کی جانب سے شریف فیملی کی شوگر ملوں کی جنوبی پنجاب منتقلی کو چیلنج کیا گیا اور ان کے وکیل اعتزاز احسن کا کہنا تھا کہ حکومت نے نئی شوگر ملز کے قیام پر پابندی لگادی تاہم پرانی شوگر ملز کی نئے مقام پر منتقلی بھی نئی شوگر ملز لگانے کے مترداف ہے،، شوگر ملوں کی منتقلی سے جنوبی پنجاب میں پانی میں کمی ہوگی اور اس سے کپاس کی فصل شدید متاثر ہوگی، لاہور ہائیکورٹ نے چند ماہ قبل اس معاملے پر فریقین کے دلائل مکمل ہونے پر فیصلہ محفوظ کیا تھا، عدالت نے آج فیصلہ سناتے ہوئے شوگر ملز کی منتقلی کو غیر قانونی قرار دے دیا،، اس سے قبل سپریم کورٹ نے کیس کی سماعت کرتے ہوئے ملوں کی کرشنگ کے خلاف حکم امتناعی جاری کرتے ہوئے معاملہ لاہور ہائی کورٹ کو بھجوا دیا تھا تاکہ ہائی کورٹ اس کیس کو سن کر فیصلہ کرے

Most Popular