1کروڑ 50لا کھ ایکڑزمین پاکستان میں کلی یہ جز وی طورپر کلر اورتھور سے متاثرہوچکی ہے۔

1کروڑ 50لا کھ ایکڑزمین پاکستان میں کلی یہ جز وی طورپر کلر اورتھور سے متاثرہوچکی ہے۔

سلانوالی۔12 جنوری (اے پی پی )زرعی ماہرین کے مطا بق 1کروڑ 50لا کھ ایکڑزمین پاکستان میں کلی یہ جز وی طورپر کلر اورتھور سے متاثرہوچکی ہے ہما ری زمینوںمیں نامیاتی مادہ کی مقدا ر 0.5فیصد یا ا س سے بھی کم ہے جبکہ اچھے نتائج کیلئے ضروری ہے کہ ا س کی مقدا ر 0.86فیصد سے لے کر 1.30فیصد یا ا سے بھی ز یاد ہ ہونی چاہیے گرمیوںمیں در جہ حرارت بڑ ھ جاتا ہے ا س لے نامیاتی ما د ہ زمین سے ضائع ہوتارہتا ہے ا س لیے اس امر کی اشدضرورت ہے کہ کاشت کار اپنی زمینوںمیں نامیاتی ماد ہ مسلسل ڈالتے رہیں کسی بھی اصلاحی تدابیرپر عمل کرنے سے پہلے کلر اٹھی زمینوں کی درجہ بندی کاعمل ہوناضروری ہے جو ا س طرح ہے سفیدکلر والی زمین سفیدکلرمیں نمکیا ت عام طور پر سفیدرنگ کی تہہ شکل میں زمین کی سطح پرنظرآتے ہیں ا س زمین میں پانی اور ہوا کی نفوذ پذیر ی متاثرنہیں ہوتی ا ورا س میں پانی جذب ہوجاتا ہے ایسی زمینوںمیں گہرا ہل چلا کرنہری ٹیوب ویل کے اچھی قسم کے پانی سے تین چا ر با ر گہر ی آبپاشی کی جائے تونمکیا ت کافی حدتک نیچے چلے جاتے ہیں اورزمین کا شت کے قابل بن جاتی ہے کالے کلر والی زمینو ں میں زمین کی سطح پر کالے رنگ کی تہ سی جمی نظر آتی ہے زمین پر گھا س یہ جڑ ی بوٹیاں نظر نہیں آتی ایسی زمینوںمیں پانی بھی جذب نہیں ہوتا اورپانی لگادیں تو کئی دن تک گدلا پانی کھڑا نظرآتا ہے ایسی زمینوںمیں جپسم یا گند ھک کاتیزاب استعمال کریں توزمین کی اصلاح ہوجاتی ہے کالے اورسفیدکلروالی زمینیں ا س قسم کے کلر میں زمین کی سطح سفید یہ کا لا یہ بھورا رنگ اختیارکرلیتی ہے ا س کی و جہ یہ ہے کہ زمین میں موجود نامیاتی ما د ے سوڈیم کی وجہ سے منتشر ہوکر مٹی کے زرات کا رنگ کالا کردیتے ہیں ایسی زمینوںمیں پانی جذ ب ہوجاتا ہے پانی لگنے کے بعد یہ ز مین کالے رنگ میں تبدیل ہوجاتی ہے ۔

Most Popular