وفاقی کابینہ نے قبائلی علاقوں میں اصلاحات کا عمل تیزکرنے کیلئے سپریم کورٹ اوراسلام آباد ہائیکورٹ کے دائرہ اختیارکوفاٹا تک بڑھانے کا بل پارلیمنٹ میں پیش کرنے کی منظوری دے دی

وفاقی کابینہ نے قبائلی علاقوں میں اصلاحات کا عمل تیزکرنے کیلئے سپریم کورٹ اوراسلام آباد ہائیکورٹ کے دائرہ اختیارکوفاٹا تک بڑھانے کا بل پارلیمنٹ میں پیش کرنے کی منظوری دے دی


وزیراعظم شاہدخاقان عباسی کی زیرصدارت وفاقی کابینہ کا اجلاس ہوا،،کابینہ نے قبائلی علاقوں کے روایتی ایف سی آرضابطہ کوختم کرنے،وہاں ملک کی اعلیٰ عدلیہ کا اختیاربڑھانے کیلئے مرحلہ واراقدام اٹھانے کا فیصلہ کیا،،اس سلسلے میں پہلے فاٹا کوسپریم کورٹ اوراسلام آباد ہائیکورٹ کے دائرہ اختیارمیں لایا جائے گا،،کابینہ نے قبائلی علاقوں کی سماجی اورمعاشی ترقی کیلئے بھرپورمالی وسائل فراہم کرنے کے عزم کابھی اظہارکیا،کابینہ نے ایس ای سی پی اور مسابقتی کمیشن کی سالانہ رپورٹس کوپارلیمنٹ میں پیش کرنے کی منظوری دی،،نیپرا نے بھی ملک میں بجلی کی صورتحال پراپنی رپورٹ کابینہ کے سامنے پیش کی،،وزیراعظم نے بجلی کی پیداوار، تقسیم کار،ادائیگیوں اور واجبات کے بارے میں آئندہ اجلاس میں تفصیلات طلب کرلیں،کابینہ نے تنزانیہ کے ساتھ سرکاری اورسفارتی پاسپورٹ کے حامل افراد کو ویزا سے استثنی دینے کی منظوری بھی دی۔

Most Popular