وزیر داخلہ چودھری نثار نے کہا ہے متنازع اخباری رپورٹ قومی سلامتی کو نشانہ بنانے کی کوشش ہےجس سےملک دشمنوں کو ہمارے خلاف چارج شیٹ کرنے کا موقع دیا گیا

وزیر داخلہ چودھری نثار نے کہا ہے متنازع اخباری رپورٹ قومی سلامتی کو نشانہ بنانے کی کوشش ہےجس سےملک دشمنوں کو ہمارے خلاف چارج شیٹ کرنے کا موقع دیا گیا


اسلام آباد میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے چودھری نثار نے کہا متنازع خبر کے حوالے سے اعلیٰ سطح کا اجلاس ہوا جس میں فیصلہ کیا گیا کہ یہ قومی سلامتی کا معاملہ ہے جامع تحقیقات کرینگے,انہوں نے کہا صحافی نے خود لکھا اجلاس کےشرکا نےاس خبر کی تردید کی,مگر اس نے ٹویٹ کی کہ وہ اپنے موقف پر قائم ہے جس سے معاملہ مزید بڑھ گیا,وزیر داخلہ نے کہا خبر چھپنے کے اگلے روز وہ صحافی دبئی جا رہا تھا اس لیے نام ای سی ایل میں ڈالنا پڑا ۔ اگر وہ باہر چلا جاتا تو سب کہتے کہ حکومت نے خبر چھپوا کر صحافی کو فرار کرا دیا,دو تین مزید افراد ہیں جو تحقیقات مکمل ہونے تک بیرون ملک نہیں جا سکتے,اس بحث میں نہیں پڑنا چاہتے کہ ان افراد میں کوئی وزیر بھی شامل ہے یا نہیں,وزیر داخلہ نے کہا یہ معاملہ ن لیگ حکومت یا فوج کا نہیں بلکہ سب کا مشترکا ہے,ایک خبر سے دنیا بھر میں پاکستان کی بدنامی ہوئی اور بھارت کو ہمارے خلاف پراپیگنڈا کا موقع ملا اور بھارتی صحافی نے کہا اس خبر سے ہمارے موقف کی تائید ہوئی ہے,وزیرداخلہ نے کہا صحافی کو کچھ بتانا اور کچھ پوچھنا چاہتے ہیں لیکن وہ بیان ریکارڈ کرانے میں تعاون نہیں کررہےحکومت کے پاس بھی دکھانے اور بتانے کو بہت کچھ ہے لیکن ابھی اس کا وقت نہیں آیا جمعے سی پی این اے اور اے پی این ایس کے عہدیداروں سے ملاقات میں حکومت موقف سامنے رکھا جائے گا

Most Popular