نواز شریف نے جے آئی ٹی کی رپورٹ کو مخالفین کے بے بنیاد الزامات کا مجموعہ قرار دے دیا

 نواز شریف نے جے آئی ٹی کی  رپورٹ کو مخالفین کے بے بنیاد الزامات کا مجموعہ قرار دے دیا


Montage
وزیراعظم نوازشریف کی زیر صدارت پارلیمانی پارٹی کا اہم اجلاس ہوا، وزیراعظم کی آمد پراراکین نے تالیاں بجاکر ان کا استقبال کیا۔اجلاس میں جے آئی کی رپورٹ اور بعد کی صورتحال پر تفصیلی تبادلہ خیال کیا گیا، اس موقع پر اپوزیشن کی جانب سے وزیراعظم نواز شریف کے مستعفی ہونے کا مطالبہ بھی زیر غور آیا، وزیراعظم نواز شریف ایک بار پھر کہا کہ وہ سازشی ٹولے کے کہنے پر ہر گز مستعفی نہیں ہونگے، ان کا کہنا تھا کہ جے آئی ٹی کی رپورٹ مخالفین کے بے بنیاد الزامات کا مجموعہ ہے، رپورٹ میں ہمارے موقف اورثبوتوں کو جھٹلانے کیلئے کوئی ٹھوس دستاویزات پیش نہیں کی گئیں، صرف ہمارے خاندان کے 62سالہ کاروباری معاملات کو مفروضوں ، سورس رپورٹوں ، بہتانوں اور الزام تراشیوں کی بنیاد پر نشانہ بنایا گیا ہے ، کوئی ایک جملہ ایسا نہیں جس سے اشارہ بھی ملے کہ نواز شریف کرپشن کا مرتکب ہوا وزیراعظم کا کہنا تھا کہ ان کے اقتدار کے پانچوں ادوار اور شہباز شریف کے ادوار میں اگر رتی بھر کی کرپشن ہے تو بتائے جائے، رپورٹ کے چار ہزار صفحات میں کرپشن، بدعنوانی کا کوئی الزام تک نہیں لگایا جاسکا، سینکڑوں ترقیاتی منصوبوں میں ایک پیسے کی کک بیکس، کمیشن یا بدعنوانی کا کوئی داغ ہے تو سامنے لایا جائے، کچھ تو بتایا جائے کہ کسی کنٹریکٹ، ٹھیکے یا کسی منصوبے میں نواز شریف نے بدعنوانی کی ہو،وزیراعظم کا کہنا تھا کہ ان کے راستے میں مشکلات کھڑی کی گئی لیکن وہ اپنے نظریہ او رموقف پر جمے رہے، نااہل قرار دے کر انتخابات سے باہر کیا گیا لیکن ہمت نہیں ہاری ، مشرف کی آمریت کے سامنے سر نہیں جھکایا ،،، جان ہتھیلی پر رکھ کر عدلیہ کی بحالی کیلئے لانگ مارچ کیا۔ جو بڑے بڑے لیڈر بنے بیٹھے ہیں اُس وقت چھپ گئے تھے۔ ان کا کہنا تھا کہ 2013ء کے انتخابات کے بعد ہی ایک بلا جواز مہم کا آغاز کردیا گیا ۔ پچھلے چار سالوں اور دھرنوں کے دوران کیا کچھ ہوتا رہا، پاکستان کی تاریخ میں کبھی توانائی کے اتنے منصوبے نہیں لگے، ہم نے فوج کے ساتھ بیٹھ کر دہشت گردی کے خاتمے کا فیصلہ کیا۔ کراچی کو امن وامان دیا،، بلوچستان کی صورتحال کو سنبھالا، پاکستان کی اکانومی شاندار ترقی کر رہی ہے، دُکھ ہوتا ہے کہ سیاسی عدم استحکام اور بے یقینی پیدا کرنے والے عناصر ملک کو نقصان پہنچا رہے ہی، ہم جمہوریت ، رُول آف لا ء اور عدلیہ کی آزادی پر یقین رکھتے ہیں۔۔ اب آپ پر یہ تیسرا حملہ ہورہا ہے، وقت آنے پرعوام احتساب کیلئے پیش ہوں گے،،یقین ہے عدالت تحفظات کو سنے گی۔

Most Popular