سپریم کورٹ نے شریف خاندان کی پاناما نظرثانی اپیلیں مسترد کردیں

سپریم کورٹ نے شریف خاندان کی پاناما نظرثانی اپیلیں مسترد کردیں

جسٹس آصف سعید کھوسہ کی سربراہی میں جسٹس گلزار احمد، جسٹس اعجاز افضل خان، جسٹس عظمت سعید اور جسٹس اعجاز الاحسن پر مشتمل 5 رکنی لارجر بینچ نے شریف خاندان کی جانب سے دائر نظرثانی اپیلوں کی سماعت کی۔ سابق وزیراعظم نواز شریف، حسن، حسین، مریم نواز، کیپٹن (ر)صفدر اور اسحاق ڈار نے پاناما کیس پر نظرثانی اپیلیں دائر کی تھیں۔ عدالت نے نظرثانی اپیلوں پر پہلی سماعت 12 ستمبر کو کی اور 4 سماعتوں کے بعد عدالت نے تمام اپیلیں خارج کردیں۔ سابق وزیراعظم نواز شریف کی جانب سے ان کے وکیل خواجہ حارث، حسن، حسین اور مریم نواز کی جانب سے سلمان اکرم راجا ایڈووکیٹ اور اسحاق ڈار کی جانب سے شاہد حامد ایڈووکیٹ نے عدالت کے روبرو دلائل دیے۔ نظرثانی اپیلوں کا فیصلہ سناتے ہوئے جسٹس آصف سعید کھوسہ نے کہا کہ تمام درخواستیں مسترد کی جاتی ہیں اور اس کی وجوہات بعد میں بتائی جائیں گی۔

Most Popular