بھارت نے کلبھوشن جادیو کی اہلیہ کو اکیلے پاکستان بھیجنے سے انکار کر دیا

بھارت نے کلبھوشن جادیو کی اہلیہ کو اکیلے پاکستان بھیجنے سے انکار کر دیا

دفتر خارجہ کا کہنا ہے کہ بھارتی جاسوس کلبھوشن جادیو کی اہلیہ سے ملاقات کی پاکستانی پیش کش سے متعلق بھارتی جواب موصول ہوگیا جس کا جائزہ لیا جارہا ہے۔بھارت کی جانب سے جواب میں کہا گیا ہےکہ کلبھوشن کی اہلیہ اکیلی پاکستان نہیں آسکتیں، ان کی والدہ کے ویزے کی درخواست بھی پاکستان میں زیر التواء ہے، لہٰذا انہیں بھی انسانی بنیادوں پر ویزا دیا جائے, پاکستان نے دس نومبر کو بھارتی جاسوس کلبھوشن جادیو کی اہلیہ کو شوہر سے ملاقات کی پیش کش کی تھی۔ پاکستانی دفتر خارجہ کی جانب سے جاری بیان میں کہا گیا تھا کہ کلبھوشن جادیو کو اہلیہ سے ملاقات کی اجازت انسانی ہمدردی کی بنیاد پر دی گئی ہے, واضح رہے کہ کلبھوشن جادیو کو تین مارچ دو ہزار سولہ کو بلوچستان سے گرفتار کیا گیا تھا, ٹرائل کے بعد کلبھوشن کو دس اپریل دو ہزار سترہ کو سزائے موت سنائی گئی۔۔ تاہم بھارت نے یہ فیصلہ عالمی عدالت انصاف میں چیلنج کر دیا, عالمی عدالت نے کلبھوشن کی سزائے موت کے خلاف بھارت کی درخواست پر فیصلہ سناتے ہوئے کہا تھا کہ حتمی فیصلہ آنے تک کلبھوشن کو پھانسی نہیں دی جاسکتی

Most Popular