بھارتی جاسوس کی سزائے موت پر کوئی ابہام نہیں ، عمل درآمد ملکی قانون کے مطابق ہوگا۔ چوہدری نثار

بھارتی جاسوس کی سزائے موت پر کوئی ابہام نہیں ، عمل درآمد ملکی قانون کے مطابق ہوگا۔ چوہدری نثار

وفاقی وزیر داخلہ چوہدری نثار علی خان نے کلبھوشن کے معاملے پر عالمی عدالت انصاف کی رکاوٹ کو یکسر مسترد کرتے ہوئے دوٹوک الفاظ میں وضح کیا ہے کہ رتی جاسوس کی سزائے موت پر عمل درآمد ملکی قانون کے مطابق ہو گا،پاکستان کے عوام قومی سلامتی سے متعلق معاملات میں متحد ہیں، جہاں ابہام نہیں وہاں ابہام پیدا نہ کیا جائے، کلبھوشن کے حوالے سے بھی کسی قسم کا کوئی ابہام نہیں، وہ غیر ملکی ایجنٹ اور جاسوس ہے، وہ پاکستان میں دہشتگردی کی کئی وارداتوں کا مرتکب ہوا ہے اور اگر اسے وقت پر نہ پکڑا جاتا تو اور زیادہ تباہی کا مرتکب ہوتا،چند لوگوں نے ملک میں شر کا طوفان برپا کررکھا ہے ان سے متحدہ ہو کر نمٹنا ہو گا، افغان حکومت الزام تراشی کے بجائے اپنی داخلی کمزوریوں پر توجہ دے ، افغانستان کا بھارت کی زبان میں بات کرنا قابل قبول نہیں۔ان خیالا ت کا اظہار انھوں نے پشاور کے علاقے وارسک میں ایف سی کی پاسنگ آو¿ٹ پریڈ سے خطاب اور میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کیا۔انھوں نے کہا کہ بھارتی جاسوس کے معاملے پر پاکستان نہیں بھارت عالمی عدالت انصاف میں گیا ہے ، کلبھوشن یادیو دہشتگردی کا ارتکاب کرتے ہوئے پاکستان سے گرفتار ہوا ہے اور اسے ملک کے قانون اور آئین کے مطابق ہی منطقی انجام تک پہنچایا جائے گا۔ وزیر داخلہ نے کہا کہ پاکستان کے عوام قومی سلامتی سے متعلق معاملات میں متحد ہیں، جہاں ابہام نہیں وہاں ابہام پیدا نہ کیا جائے، کلبھوشن کے حوالے سے بھی کسی قسم کا کوئی ابہام نہیں، وہ غیر ملکی ایجنٹ اور جاسوس ہے، وہ پاکستان میں دہشتگردی کی کئی وارداتوں کا مرتکب ہوا ہے اور اگر اسے وقت پر نہ پکڑا جاتا تو اور زیادہ تباہی کا مرتکب ہوتا، پاکستان اس کے تمام معاملات ایک جاسوس کے طور پر اپنے ملک کے آئین اور قانون کے مطابق حل کرے گا۔اسے پاکستان کے قانون اور آئین کے مطابق ہی منطقی انجام تک پہنچایا جائے گا۔چوہدری نثار نے کہا کہ پاکستان اور افغانستان کی عوام کے دل ایک ساتھ دھڑکتے ہیں جبکہ پاکستان کسی ایسی پالیسی کا ساتھ دینے کا سوچ بھی نہیں سکتا جو افغانستان کی خودمختاری اور امن میں خلل ڈالے۔انہوں نے کہاکہ افغان حکومت الزام تراشی کے بجائے اپنی داخلی کمزوریوں پر توجہ دے ، افغانستان کا بھارت کی زبان میں بات کرنا قابل قبول نہیں۔انہوں نے یہ بھی کہا کہ رمضان المبارک کے بعد ایران کا دورہ کروں گا، ایران سے ہمارے قریبی تعلقات ہیں اور آئندہ بھی رہیں گے۔انہوں نے بتایا کہ ایرانی صدر حسن روحانی کے دورہ پاکستان کے دوران بھی دونوں ملکوں کی اعلی قیادت میں یہ اتفاق ہوا تھا کہ دونوں ممالک سرحد پار دہشت گرد کارروائیوں کا آلہ کار نہیں بنیں گے۔چوہدری نثار نے کہا کہ ایف سی چھوٹی موٹی فورس نہیں ،اس کی 100 سال پرانی تاریخ ہے اور اس تاریخ میں خطے کے سیکڑوں جوانوں و افسران کا خون شامل ہے۔ آپ کو غازیوں اور شہیدوں کی فورس کے نئے معیار قائم کرنے ہیں۔ آپ صرف ایف سی کے سپاہی نہیں بلکہ اسلام اور وطن عزیز کے سپاہی ہیں۔ آپ اس ملک کے محافظ ہیں جو اللہ اور اس کے رسول کے نام پر حاصل کیا گیا۔ آپ کو اس ملک سے شر کو ختم کرنا ہے۔انہوں نے کہا کہ مٹھی بھر لوگوں نے پندرہ برسوں کے دوران شر اور فساد کو طوفان برپا کررکھا ہے۔آپ اسلام، پاکستان کے سپاہی ہیں اور آپ نے اس ملک سے شر اور فساد کو ختم کرنا ہے۔یہ لوگ اسلام کے نام پر معصوم بچوں ، خواتین اور بے گناہ شہریوں کو قتل کرتے ہیں، وہ نام تو اسلام کا استعمال کرتے ہیں لیکن وہ کفار سے پیسہ لے کر فساد کرتے ہیں، آپ کو ان لوگوں کا مقابلہ کرنا ہے جن کا کام فساد ہے، جو ہمارے دشمنوں سے پیسہ لیتے ہیں اور نام اسلام کا لیتے ہیں، انہوں نے اسلام کو بدنام کردیا ہے۔ آپ کو اپنے زور بازو سے ان کا قلع قمع کرنا ہے۔ان کا مزیدکہنا تھا کہ فساد اللہ تعالی کو بھی سخت ناپسند ہے اور ایسے لوگ اللہ کے حکم کی نافرمانی کرتے ہیں جبکہ اسلام کے نام پر معصوموں کو شہید کرنے والے مٹھی بھر لوگوں سے آپ کو مقابلہ کر نا ہے۔انہوں نے کہا کہ ایف سی جوانوں کو اس ملک میں امن لے کر آنا ہے۔۔وزیر داخلہ نے کہا کہ حکومت ملکی دفاع پر غافل نہیں، حکومت نے اپنے دور حکومت میں ایف سی سمیت دیگر سول آرمڈ فورسز کی تشکیل نو کے لیے 80 ارب روپے سے زائد رقم خرچ کی ہے، گزشتہ 6 ماہ میں ایف سی کے 14 ہزار جوانوں کی تربیت ہوئی ہے اور یہ آگے بھی جاری رہے گی۔ ، میں دہشت گردی کے خلاف جنگ میں شہادت پانے والوں کو پھر خراج تحسین پیش کرتا ہوں۔وزیر داخلہ نے کہا کہ شہیدوں ،غازیوں کے نقش قدم پر چلتے ہوئے دہشت گردی کا مکمل خاتمہ کرنا ہے اور دہشت گردوں کے خلاف جنگ میں حصہ ڈالنا ہے ۔ان کہنا تھا کہ ہم نے دو تین ماہ میں 29 ونگز تیار کرنے ہیںتاکہ ہم مل کر اس ملک کو دہشت گردی سے مکمل پاک کردیں۔

Most Popular