سپریم کورٹ کو اتنی لمبی سماعت کے بعد جے آئی ٹی بنانے کی ضرورت نہیں تھی,سابق چیف جسٹس افتخار چودھری

 سپریم کورٹ کو اتنی لمبی سماعت کے بعد جے آئی ٹی بنانے کی ضرورت نہیں تھی,سابق چیف جسٹس افتخار چودھری

سابق چیف جسٹس اورڈیمو کریٹک پارٹی کے سربراہ افتخار چودھری نے نجی ٹی وی کو انٹرویو میں کہا ہے کہ پاناما کیس فیصلے میں دوججوں نے وزیراعظم نواز شریف کیخلاف نااہلی کا فیصلہ دیا ہے،،، وزیراعظم نے عدالت میں جھوٹ بولا،،قطری خط کی کوئی وضاحت پیش نہیں کی،،،مسلم لیگ ن منی ٹریل کے ثبوت بھی پیش نہیں کرسکی،،،ان کا کہا تھا کہ سپریم کورٹ نے وزیراعظم کو جے آئی ٹی کے سامنے پیش ہونے پر مجبور کردیا ہے، جے آئی ٹی میں ایف آئی اے کے افسران شریک ہوں گے جو وزیراعظ کے ماتحت ہیں،،،ان کا کہنا تھا وزیراعظم کے عہدے پر ہوتے ہوئے جے آئی ٹی آزادانہ تحقیقات نہیں کرسکتی،،،انھوں نے کہا کہ اتنی لمبی سماعت کے بعد جے آئی ٹی بنانے کی ضرورت نہیں تھی اگر میں جج ہوتا تو ریمارکس نہیں دیتا فیصلہ سنا دیتا

Most Popular