عدالت کےفیصلےکوسیاست کی بھینٹ نہ چڑھایاجائے,آصف زرداری کاایمانداری پرلیکچردیناقیامت کی نشانی ہے,وزیر داخلہ چودھری نثار

عدالت کےفیصلےکوسیاست کی بھینٹ نہ چڑھایاجائے,آصف زرداری کاایمانداری پرلیکچردیناقیامت کی نشانی ہے,وزیر داخلہ چودھری نثار

وفاقی وزیر داخلہ چودھری نثار علی خان نے ٹیکسلا میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ کوئی بھی عدالتی فیصلہ کسی کی خواہش کے مطابق نہیں بلکہ آئین اور قانون کے مطابق ہوتا ہے۔ پاناما کیس کے فیصلے کو دو تین کا فیصلہ قرار دینا درست نہیں ہے, معاملہ اب بھی عدالت میں ہے اسے سپریم کورٹ پر چھوڑ دیں۔۔ انہوں نے کہا کہ پاناما کیس کا فیصلہ متفقہ ہے, لیکن اس فیصلے کو اپنی خواہشات کے مطابق طرح طرح کے معنی دیے جا رہے ہیں۔ چودھری نثار کا کہنا تھا کہ دو ججز نے فیصلے پر اختلافی نوٹ ضرور لکھا لیکن جے آئی ٹی بنانے کے لیے پانچوں ججوں کے دستخط موجود ہیں۔ فیصلے میں یہ بھی کہا گیا کہ الزام لگانے والوں کے پاس شواہد نہیں ہیں۔ انہوں نے کہا کہ خدارا قانون اور آئین پر رحم کیا جائے۔ عدالتی فیصلے کو سیاست کی بھینٹ نہیں چڑھنا چاہیے,
چودھری نثار کا کہنا تھا کہ وزیراعظم نے خود کو احتساب کیلئے پیش کرنے کی روایت قائم کی حالانکہ ان پر کوئی دباؤ نہیں تھا۔ دھرنے والے ناکام ہو گئے تھے۔ انہوں نے سابق صدر آصف علی زرداری کو شدید تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہا کہ یہ قیامت کی نشانی ہے کہ آصف زرداری قوم کو ایمانداری پر لیکچر اور سرٹیفیکیٹ دیں, سوئس عدالتوں سے سزا یافتہ ہمیں سبق دے رہے ہیں,
ایک سوال کا جواب دیتے ہوئے وزیر داخلہ نے بتایا کہ نیوز گیٹ سکینڈل کی رپورٹ پیر یا منگل کو پیش کر دی جائے گی,چودھری نثار کا کہنا تھا کہ ہماری پرفارمنس پر تجزیہ نہیں بلکہ ناکردہ گناہوں پر ہوتا ہے۔ ہمارا موازنہ گزشتہ ادوار کی حکومتوں، معیشت اور امن و امان کی صورتحال سے کیا جائے۔ الیکشن کو گزرے چند دن ہوئے تھے کہ دھرنے شروع ہوگئے ،اب بھی یہ لوگ فیصلہ نہیں بلکہ شور شرابا اور دھرنا چاہتے ہیں۔کراچی آپریشن پر بات کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ ہمارے دشمن بھی تسلیم کرتے ہیں کہ کراچی میں واضح بہتری آئی ہے لیکن اس کے باوجود رینجرز کے اختیارات پر تنازع کھڑا کر دیا جاتا ہے

Most Popular