کنٹرول لائن کے دونوں جانب اور دنیا بھر میں مقیم کشمیری آج کا دن یوم سیاہ کے طور پرمنائیں گے

کنٹرول لائن کے دونوں جانب اور دنیا بھر میں مقیم کشمیری آج کا دن یوم سیاہ کے طور پرمنائیں گے

27 اکتوبر 1947 تاریخ کا وہ سیاہ دن تھا جب بھارتی فوج نے کشمیریوں پر مظالم، قتل عام اور جبری قبضے کا آغاز کیا جس کا سلسلہ آج تک جاری ہے،،پاکستان، آزاد کشمیر اور دنیا بھر میں مقیم کشمیری بھارتی ظلم و تشدد اور غاصبانہ قبضے کے خلاف احتجاجی مظاہرے اور ریلیاں نکالیں گے اور اقوام متحدہ کے سیکرٹری جنرل کے نام یادداشتیں پیش کی جائیں گی،،جس کا مقصد عالمی برادری پر واضح کرنا ہے کہ بھارت نے جموںوکشمیر پر جبری قبضہ کر رکھا ہے اور وہ انہیں انکا پیدائشی حق، حق خود ارادیت دینے سے مسلسل انکار کررہا ہے،جس کا وعدہ عالمی برادری نے ان سے کر رکھا ہے مقبوضہ کشمیر میں آج ہڑتال کی جائے گی، ہڑتال کی کال سید علی گیلانی ، میر واعظ عمرفاروق اور محمد یاسین ملک پر مشتمل مشترکہ حریت قیادت نے دی ہے۔دکانوں، گھروں کی چھتوںاور گاڑیوں سمیت ہر جگہ سیاہ جھنڈے لہرائے جائیں گے

سنگریز وادی میں بھارتی فوج کی بربریت کو ستر سال گزر چکے ہیں، جنوری انیس سو نواسی سے اب تک بھارتی فوج نے کشمیری میں مظالم کی وہ داستان رقم کی جس کی تاریخ نہیں ملتی، گزشتہ اٹھائیس سال کے دوران ایک لاکھ کے قریب کشمیریوں کو بے دردی سے شہید کیا گیا، قتل و غارت گری کا سلسلہ آج بھی جاری ہے۔

کشمیر میڈیا سروس کے مطابق مقبوضہ وادی میں جنوری انیس سو نواسی سے ستمبر دو ہزار سترہ کے دوران چورانوے ہزار آٹھ سو چھبیس کشمیریوں کو شہید کیا گیا،جن میں سے سات ہزار اٹھانوے جیلوں میں قتل ہوئے،بائیس ہزار آٹھ سو اٹھاون خواتین سے ان کے سہاگ چھین لئے، ایک لاکھ سات ہزار چھ سو پینسٹھ بچے یتیم ہوئے، بھارتی فوج نے کشمیریوں کی آواز کو دبانے کیلئے نام نہاد آپریشنز کے ذریعے ایک لاکھ بیالیس ہزار چار سو سینتیس کشمیریوں کو گرفتار کیا، جن کا کوئی اتا پتہ نہیں، مقبوضہ وادی میں ایک لاکھ آٹھ ہزار تین سو باسٹھ گھروں اور املاک کو مسمار کیا گیا، سنگریز وادی میں بھارتی درندوں نے گیارہ ہزار سترہ خواتین کو اجتماعی زیادتی کا نشانہ بنایا، گزشتہ ماہ کے اعداد وشماری کے مطابق بائیس کشمیری بھارت فوج کی ریاستی دہشتگردی کی بھینٹ چڑھے،دنیا میں سب سے زیادہ انسانی حقوق کی پامالی بھارتی فوج کے ہاتھوں جاری ہے،، بھارت نے اپنے فوجیوں کو کشمیریوں پر ظلم و ستم کیلئے کھلی چھٹی دے رکھی ہے۔ دنیا کی سب سے بڑی جمہوریت کا دعویدار بھارت احساس کے جذبے سے عاری ہے۔ نہتے کشمیریوں پر پیلٹ گن کا بے تحاشہ استعمال، زائدالمیاد آنسو گیس کے شیل اور ہر طرح کی طاقت آزمائی جارہی ہے، بھارتی درندے خواتین کی چوٹیاں کاٹنے کی گھناؤنی وارداتیں کرنے میں مصروف ہیں۔ اپنا پورا زور لگانے کے باوجود بھی کشمیریوں نے نعرہ حق آزادی بلند کر رکھا ہے

Most Popular