مشترکہ مفادات کونسل نے ملک میں مردم شماری عارضی طور پر موخر کرنے کا فیصلہ کرلیا

 مشترکہ مفادات کونسل نے ملک میں مردم شماری عارضی طور پر موخر کرنے کا فیصلہ کرلیا

ملک میں اٹھارہ سال بعد بھی مردم شماری نہ ہو سکی، حکومت نے مارچ میں مردم شماری کرانے کا فیصلہ موخر کردیا، وزیراعظم نواز شریف کی زیر صدارت مشترکہ مفادات کونسل کے اجلاس میں چاروں صوبوں کے وزرائے اعلیٰ ، وزیر خزانہ ، وزیر پٹرولیم ، وزیر پانی و بجلی ، وزیر بین الصوبائی رابطہ وزیر مذہبی سمیت اعلیٰ حکام نے شرکت کی۔ اجلاس کے بعد جاری ہونے والے اعلامیے کے مطابق ملک میں جاری آپریشن اور فورسز کی مصروفیت کی وجہ سے مردم شماری موخر کرنے کا فیصلہ کیا گیا،،، مردم شماری کی نئی تاریخ کا اعلان صوبوں سے مشاورت کے بعد کیا جائے گا، مشترکہ مفادارت کونسل کا آئندہ اجلاس پچيس مارچ کوہوگا۔۔ جس ميں نيشنل فلڈ پروٹيکشن پلان پربات ہوگی ۔۔ کونسل نے ايل اين جی اورايل پی جی پاليسی کی منظوری بھی دی جبکہ سيکيورٹی اينڈ ايکسچينج بل کو بھی بھی منظورکرليا گیا۔۔۔ اعلامیے کے مطابق کچی کينال منصوبے ميں بےضابطگيوں کے تعين کيلئے کميشن کی منظوری دی گئی ہے جس کی سربراہی سپريم کورٹ يا ہائيکورٹ کا ريٹائرڈ جج کرےگا، وزيراعظم نوازشريف نے مشترکہ مفادات کونسل کے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ دہشتگردی کيخلاف جنگ بہت اہم ہے ۔۔ وہ دن دورنہيں جب دہشتگردی کا خاتمہ کر ديا جائے گا ۔

Most Popular