توہین عدالت کیس: میرے خلاف کیس ایسے قانون کے تحت سنا جارہا ہے جو موجود ہی نہیں۔ بابر اعوان

توہین عدالت کیس: میرے خلاف کیس ایسے قانون کے تحت سنا جارہا ہے جو موجود ہی نہیں۔ بابر اعوان

بابراعوان کے خلاف سپریم کورٹ میں توہین عدالت کیس کی سماعت ہورہی ہے۔ جسٹس اعجازافضل خان کی سربراہی میں دورکنی بنچ نے کیس کی سماعت کی ۔ سابق وفاقی وزیربابراعوان نے دلائل دیتے ہوئے کہا کہ پریس کانفرنس میں دیگر وزراء بھی شریک تھے مگران کے ساتھ امتیازی سلوک برتا جارہا ہے۔ بابر اعوان کا کہنا تھا کہ اٹارنی جنرل بھی کہہ چکے ہیں کہ ملک میں توہین عدالت کا قانون ہی نہیں۔ اس پر جسٹس اعجاز افضل خان نے ریمارکس دیے کہ وہ غیر متعلقہ دلائل نہ دیں اور نہ کارروائی سے متعلق پیشگی اندازے لگائیں۔بابر اعوان نے کہا کہ سپریم کورٹ نے جس طرح ارسلان افتخارکیس اورشکیل انجم کیس متعلقہ فورم کو بھجوائے اسی طرح باقی مقدمات بھی بھجوانے چاہییں۔ انہوں نے درخواست کی کہ ان کے معافی نامے پر غور کیا جائے کیوں کہ کیس آخری مراحل میں ہے۔ اانہوں نے عدالت سے دلائل کے لیے مزید مہلت طلب کی جس پر عدالت نے کل تک کے لیے سماعت ملتوی کردی۔

About the author /

Waqt News

Waqt News Web Team

Most Popular