قانون کی حکمرانی کیلیے عدالتی فیصلہ تسلیم کیا۔ جانتا ہوں میرے ساتھ مستقبل میں کیا ہونے والا ہے:سابق وزیراعظم نواز شریف

 قانون کی حکمرانی کیلیے عدالتی فیصلہ تسلیم کیا۔ جانتا ہوں میرے ساتھ مستقبل میں کیا ہونے والا ہے:سابق وزیراعظم نواز شریف


سابق وزیراعظم نوازشریف نے پنجاب ہاوس میں اپنی سیاسی سرگرمیوں کا سلسلہ جاری رکھا۔ دن بھر پارٹی وزرا اور اراکین پارلیمان سے ملاقاتیں کیں۔ جڑواں شہروں کے تاجروں کے ایک وفد نے بھی سابق وزیراعظم سے ملاقات کی اور ان سے اظہار یکجہتی کیا۔ اس موقع پر میاں نوازشریف کا کہنا تھا کہ وہ قانون کی حکمرانی پر یقین رکھتے ہیں اس لئے عدالتی فیصلہ تسلیم کیا لیکن عوام نے پاناما فیصلے کو تسلیم نہیں کیا۔ انہوں نے کہا معلوم ہے ان کے ساتھ آگے کیا ہونے والا ہے۔ اداروں سے ٹکراؤ کا حامی نہیں لیکن سازش سے پردہ ضرور اٹھاؤں گا۔ احتساب کے نام پر استحصال کیا گیا مگر جھکوں گا نہیں۔ میاں نوازشریف نے کہا کہ عوام نے انہیں مینڈیٹ دیا، سویلین بالادستی کو تسلیم کیا جائے۔ سابق وزیراعظم نے سوال اٹھایا کہ آئین توڑنے والوں کو سزا کیوں نہیں دی گئی اور کیا پاناما کیس میں صرف ان کے خاندان کا نام تھا۔ قومی خزانے کے اربوں روپے لوٹنے والے آج تک نہیں پکڑے گئے۔ دوسری جانب سابق وزیرداخلہ چوہدری نثار، پرویزرشید، آصف کرمانی اور دیگر لیگی رہنماوں نے بھی سابق وزیراعظم سے علیحدہ علیحدہ ملاقاتیں کیں اور نواگست کو براستہ جی ٹی روڈ لاہور روانگی کے حوالے سے تبادلہ خیال کیا۔ لیگی رہنماؤں نے سابق وزیراعظم کو لاہور روانگی کی تیاریوں کے حوالے سے انتظامات سے بھی آگاہ کیا۔

Most Popular