اتنے دکھ یا زخم نہ دیے جائیں کہ غصے اورتکلیف میں راستے ناقابل واپسی ہوجائیں ،سابق وزیراعظم نوازشریف

 اتنے دکھ یا زخم نہ دیے جائیں کہ غصے اورتکلیف میں راستے ناقابل واپسی ہوجائیں ،سابق وزیراعظم نوازشریف

نوازشریف نے پنجاب ہاؤس میں وکلاء سے ملاقات کی ، جس کے بعد خطاب کرتےہوئے کہا کہ ، کسی بھی خودمختاراورعزت دارملک کیلئے ٹرمپ کا بیان قابل برداشت نہیں تاہم اس کی وجوہات دیوارپرلکھی ہوئی ہیں، انہوں نے کہا کہ وہ اورمریم احتساب عدالت میں پیش ہورہے ہیں، عمران خان اورجہانگیرترین کے مقدمے میں نگران جج مقررہوا نہ ہی نیب کوذمہ داری سونپی گئی ،، آج کل آنے والی خبروں کودیکھ کرعمران خان کوصادق وامین قراردینے والے جج کوسلوٹ کرتے ہیں , نوازشریف نے کہا ان کا سپریم کورٹ یاججزسے کوئی جھگڑا نہیں تاہم نااہلی کے فیصلے پرعملدرآمد کرتے ہوئے اختلاف رائے کرتے ہیں ، ماضی کے وزرء اعظم کے ساتھ رواء رکھا جانے والا یہ سلوک بند ہونا چاہیے ، وہ ڈرنے اورگھبرانے والے نہیں لیکن اتنے دکھ یا زخم نہ دیے جائیں کہ غصے اورتکلیف سے راستہ ناقابل واپسی ہوجائے ,نوازشریف نے کہاکہ مائنس ون فارمولے والے ناکام ہوئے ، کوئی بیرتھا ،شکل اچھی نہیں لگتی یا اچھی عادت کا مالک نہیں توبتا دیں ,

نواز شریف نے کہا کہ جج صاحب ہسپتالوں میں ضرورجائیں ، لیکن التواء کا شکار لاکھوں مقدمات پربھی نظرکریں 

Most Popular