این اے ایک سو بائیس ضمنی الیکشن کے دوران پولنگ اسٹیشنز میدان جنگ بنے،ن لیگ کے متوالے اور پی ٹی آئی کے ٹائیگرز ایک دوسرے سے گتھم گتھا

این اے ایک سو بائیس ضمنی الیکشن کے دوران  پولنگ اسٹیشنز میدان جنگ بنے،ن لیگ کے متوالے اور پی ٹی آئی کے ٹائیگرز  ایک دوسرے سے گتھم گتھا

الیکشن کا ماحول ہو،اور ن لیگ اور تحریک انصاف کے کارکن آمنے سامنے نہ آئیں ،ایسا ممکن نہیں۔حلقہ این اے ایک سو بائیس کے ضمنی الیکشن میں بھی یہی صورتحال دیکھنے میں آئی۔ پارٹی رہنماؤں کی پر امن رہنے کی اپیلوں کے باوجود جوشیلے کارکن خود پر قابو نہ رکھ سکے اور ایک دوسرے پر چڑھ دوڑے۔بستی سیدن شاہ کے پولنگ اسٹیشن پر دونوں جماعتوں کے کارکنوں نے ایک دوسرے کیخلاف شدید نعرےبازی کی ۔ معاملہ ادھر نہیں تھما۔ دونوں اطراف سے کرسیاں چلائی گئیں اور کیمپ اکھاڑ دیئے گئے۔ لاتوں اور مکوں کا آزادانہ استعمال کیا گیا۔ووٹر لسٹیں بھی پھاڑ دی گئیں۔ پاک فوج اور پولیس کے جوان موقع پر پہنچ گئے اور صورتحال کو قابو میں کیا.سمن آباد پولنگ اسٹیشن پر بھی یہی منظر پیش کیا گیا۔پولنگ اسٹیشن کے باہر ورکرز پر جوش مخالفانہ نعرے لگاتے رہے ۔مقامی رہنما کارکنوں کو نعروں سے روکتے اور بیچ بچاؤ کی کوشش کرتے رہے ۔ ادھر سردار گرلز ہائی اسکول علامہ اقبال روڈ گڑھی شاہو کے پولنگ اسٹیشن پر بھی بد نظمی دیکھنے میں آئی۔پی ٹی آئی کے پولنگ ایجنٹ نے انتخابی عمل کا بائیکاٹ کردیا۔ پولنگ ایجنٹ نے الزام لگایا کہ بیلٹ باکسز ان کے سامنے سیل نہیں کیے گئے جبکہ ووٹرز کو پہلے ہی اندر بھیج دیا گیا تھا۔ دوسری جانب پرائمری سکول رحمان پورہ پولنگ اسٹیشن میں اسلحہ لے کر داخل ہونیوالے سیاسی جماعت کے کارکن کو گرفتار کرلیا گیا۔ ملزم کیخلاف تھانہ وحدت کالوں میں مقدمہ درج کیا گیا ہے ۔

Most Popular