کوئی وجہ تو تھی کہ جسٹس آصف سعید کھوسہ نے ''گاڈ فادر''کا نام لیا؟۔ رہنما تحریک انصاف

کوئی وجہ تو تھی کہ جسٹس آصف سعید کھوسہ نے ''گاڈ فادر''کا نام لیا؟۔ رہنما تحریک انصاف

پاکستان تحریک انصاف کے مرکزی رہنمائوں اسد عمر اور شفقت محمود نے کہا ہے کہ جے آئی ٹی رپورٹ سے ثابت ہوتا ہے کہ اسحاق ڈار حدیبیہ مل سے متعلق اعترافی بیان سچ تھا،اسحاق ڈار صاحب اگر فوجداری مقدمات بنے توآپ پھر بھی ان کے دفاع کے لیے کھڑے رہیں گے،آج ساری قوم اکھٹی ہو چکی ہے اور تما م سیاسی جماعتیں کہہ رہی یں کہ استعفیٰ دو،آپ پر کالا دھبہ لگ چکا ہے،آپ کا جانا ٹھہر گیا ہے،یہ آپ پر ہے کہ عزت سے جاتے ہیں یا کسی اور طرح سے، نوا زشریف کو ہر صورت گھر جانا پڑے گا ،میاں صاحب چھ ماہ پہلے استعفی دے دیتے توان کو یہ دن نہ دیکھنا پڑتا ،نواز شریف کرپشن میں پکڑا گیا ہے اس میں سازش کہاں سے آگئی؟کوئی وجہ تو تھی کہ جسٹس آصف سعید کھوسہ نے ''گاڈ فادر''کا نام لیا؟ان خیالات کا اظہار پاکستان تحریک انصاف کے مرکزی رہنمائوں اسد عمر اور شفقت محمود نے نیشنل پریس کلب اسلام آباد اسلام آباد میں مشترکہ پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کیا ۔اس عمر نے کہا کہ کل شام کو اسحاق ڈار نے بڑی اپنی پریس کانفرنس میں تفصیلی بات چیت کی، انہوں نے بڑے ٹھوس انداز میں دلائل دینے کی کوشش کی انہوں نے اپنے راشن تقسیم کرنے تک بتا دیا لیکن پانامہ کے حوالے سے ایک لفظ بھی نہیں بولے اور نہ ہی جے آئی ٹی رپورٹ میں شریف خاندان پر لگائے گئے الزامات کی صفائی دی ۔اسد عمرنے کہا کہ ڈار صاحب جہاں جواب دیا جاسکتا ہے یا دلائل دیے جاسکتے ہیں وہ دیتے ہیں انہوں نے جعلی دستاویزات پر کوئی بات نہیں کی انہوں نے جعلی دستاویزات پر بات اس لیے نہیں کی کیونکہ دلائل تھے ہی نہیں۔انہوں نے کہا کہ جے آئی ٹی رپورٹ کے صفحہ 192پر لکھا ہوا ہے اسحاق ڈار کے نیب میں حدیبیہ مل سے متعلق اعترافی بیان کا جب جائزہ لیا گیا اور اس کو گواہان کے بیانات سے جوڑنے کی کوشش کی تو پتہ چلا کہ یہ اسحاق ڈار کا اعترافی بیان سچ تھاڈار صاحب قوم کو بتائیں کہ آپ نے اعترافی بیان میں جو سچ بولا تھا اس سے ملتی جلتی دستاویزات کیوں نکل رہی ہیں؟اس طرح اسحاق ڈار نے کہا کہ میں اپنے وکیلوں کے مشورے سے بیان دیا تھا تو وکیلوں نے یہی مشورہ دیا ہوگا کہ آپ اپنی جان چھڑائیں دوسروں کے لیے اپنے آپ کو کیوں پھنسا رہے ہیں؟ڈار صاحب کیا آپ کو قوم کے لوٹے ہوئے پیسے پرسہولت کار بننا چاہیے؟انہوں نے کہا کہ جب اسحاق ڈار کے جوانی کے دوست اور ان لگائے ہوئے چیئرمین ایس ای سی پی کے خلاف عدالت عظمیٰ ایف آئی آر درج کرائے اور انہی کے لگائے ہوئے صدر نیشنل بینک سعید احمدکا نام جے آئی ٹی کے کہنے پر ای سی ایل میں ڈالا جائے تو اسحاق ڈار کی اپنے عہدے پر بیٹھے رہنے کی کیا تک ہے ابھی تو ان الزامات پر فوجداری مقدمات بننے ہیںکیا آپ پھر بھی ان کے دفاع کے لیے کھڑے رہیں گے۔شفقت محمود نے کہا کہ اسحاق ڈار نے جب اعترافی بیان دیا تو ایک تو ان کو خوف تھا اور دوسرا شریف برادران پر غصہ تھا کہ خود تو ڈیل کر کے سعودی عرب چلے گئے اور ہم یہاں تڑپ رہے ہیںاور تیسرا یہ کہ مشرف کے دورحکومت میں انکی خواہش تھی کہ شاید انکو وزیر خزانہ بنا دیا جائے۔ایک اخبار کے سٹو ری میں لکھا ہوا ہے کہ وزیراعظم جی آئی ٹی کے سامنے پیشی کے وقت جواب دیتے ہوئے کتراتے رہے،وزیراعظم نے تمام جواب پتہ نہیںہے، یاد نہیں ہے کے دیے۔شہبازشریف سے التوفیق کے متعلق پوچھا گیا توانہوں نے اس حوالے جواب دیا مجھے پتہ نہیں۔ایک وزیر اعظم ہے دوسرا وزیر اعلیٰ،کیا ان کا حافظہ اتنا ہی کمزور ہے؟انہوں نے کہا کہ پہلے انکی جانب سے کہا گیا کہ ہمارے خلاف سازش ہورہی ہے اب یہ سازش پاکستان سے بڑھ کر بین الاقوامی ہو گئی ہے۔خدا کا خوف کرو اب آپ پھنس رہے ہو ۔آج ساری قوم اکھٹی ہو چکی ہے اور تما م سیاسی جماعتیں کہہ رہی یں کہ استعفیٰ دو،آپ پر کالا دھبہ لگ چکا ہے۔آپ کی حکومت کرنے کی استعداد نہیں رہی ۔آپ کا جانا ٹھہر گیا ہے،یہ آپ پر ہے کہ عزت سے جاتے ہیں یا کسی اور طرح سے۔اسد عمر نے کہا کہ نوا زشریف کو ہر صورت گھر جانا پڑے گا ،فیصلہ سپریم کورٹ نے کرنا ہے،میاں صاحب چھ ماہ پہلے استعفی دے دیتے توان کو یہ دن نہ دیکھنا پڑتا اور ان سارے بچوں کے نام اس طرح نہ آتے۔شفقت محمود نے کہا کہ میں جے آئی ٹی کے ممبران کو خراج تحسین پیش کرتا ہو ،انہوں نے دھمکیوں کے باوجود پروفیشنل طریقے سے کیا ہے،اسد عمر نے کہا کہ جے آئی ٹی نے ساتھ دن میں انتہائی دلیرانہ کام کیا ہے ۔شفقت محمود نے کہا کہ سعد رفیق اور مسلم لیگ(ن) کوعمران خان کے ڈراونے خواب میںآتے ہیں۔نواز شریف کرپشن میں پکڑا گیا ہے اس میں سازش کہاں سے آگئی؟اسدعمر نے کہا کہ پاکستان میں جو بھی حکومت آئے کی سی پیک کا کام جاری رہے گا ،ملکی برآمدات تاریخ کی کم تریں سطح پر ہیں،خسارہ بڑھ گیا،بین الاقوامی قرضوں میں ریکارڈ اضافہ ہوا ہے،اگر یہی ترقی کا سفر ہے تو اللہ کرے یہ رک جائے۔انہوں نے کہا کہ آئندہ ہفتے میں آپ دیکھیں گے اسلام آباد کی ن لیگ کی اہم شخصیات پی ٹی آئی میں شمولیت اختیار کریں گی۔انہوں نے کہا کہ یہ نہ اپنی چوری پکڑے جانے دیتے ہیں نہ دوسروں کی کیونکہ ان کے اپنے پکڑے جانے کا خوف ہے،کوئی وجہ تو تھی کہ جسٹس آصف سعید کھوسہ نے ''گاڈ فادر''کا نام لیا۔شفقت محمود نے کہا کہ پاکستان کی تاریخ لکھی جا رہی ہے ،اربوں پتی وزیر اعظم کٹہرے میں کھڑا ہے ،طاقت ور کا احتساب ہوگا تو لوگ کرپشن کرتے ہوئے ڈریں گے ۔

Most Popular