قومی اسمبلی کا اجلاس کورم پورا نہ ہونے پر ملتوی

قومی اسمبلی کا اجلاس کورم پورا نہ ہونے پر ملتوی

قومی اسمبلی کا اجلاس منگل کو کورم کی نظر ہو گیا ،حکومت کو شرمندگی کا سامنا کرنا پڑا ،کارروائی معطل ہو کر رہ گئی، کورم نہ ہونے پر سپیکر نے اجلاس ملتوی کر دیا۔ پرائیویٹ ممبر ڈے کے موقع پر اپوزیشن کی دونوں بڑی جماعتوں کی طرف سے دوبارہ کورم کی نشاندہی کی گئی اکثریتی حکومتی نشستیں خالی پڑی ہوئی تھیں اجلاس شروع ہوا تو ایوان میں صرف سات ارکان تھے اجلاس سپیکر سردار ایاز صادق کی صدارت میں ہوا صرف چند ارکان کی موجودگی میں اجلاس کی کارروائی کو چلایا گیا۔پرائیویٹ ممبر ڈے کے حوالے سے نجی بلز متعارف کروانے کا سلسلہ جاری تھا کہ پی پی پی کے چیف وہیب اعجاز جکھرانی نے کورم کی نشاندہی کر دی کورم کی عدم موجودگی پر سپیکر نے کارروائی کو روک دیا اور اپنے چیمبر میں چلے گئے اجلاس کی کارروائی آدھے گھنٹے تک معطل رہی ساڑھے گیارہ بجے اجلاس دوبارہ شروع ہوا بعد ازاں پاکستان تحریک انصاف کی رکن مسرت زیب نے کورم کی نشاندہی کر دی کورم پورانہیں تھا جس پر سپیکر نے کارروائی کو بدھ تک ملتوی کر دیا۔بیشتر وزراء بھی ایوان سے غائب تھے کورم کے سلسلے میں حکومت کو خفت اٹھانا پڑی۔

Most Popular