نواز شریف نے تین ریفرنسز کو یکجا کرنے سے متعلق احتساب عدالت کا فیصلہ پھر چیلنج کر دیا

نواز شریف نے تین ریفرنسز کو یکجا کرنے سے متعلق احتساب عدالت کا فیصلہ پھر چیلنج کر دیا

نواز شریف نے تین ریفرنسز کو یکجا کرنے سے متعلق احتساب عدالت کا فیصلہ پھر چیلنج کر دیا ،، درخواست میں ایک بار پھر احتساب عدالت کے فیصلے کو کالعدم قرار دینے کی استدعا کی گئی ،نواز شریف کیخلاف نیب کے تین ریفرنسز کا معاملہ ،،، احتساب عدالت کی جانب سے تینوں میں فرد جرم عائد ، نواز شریف نے ایک بار پھر تینوں ریفرنسز یکجا کرنے کیلئے عدالت عالیہ سے رجوع کر لیا ، درخواست وکیل اعظم تارڑ کے ذریعے اسلام آباد ہائیکورٹ میں دائر کر دی گئی ،، درخواست میں موقف اختیار کیا گیا کہ ‏اسلام آباد ہائیکورٹ کے تفصیلی فیصلے میں درج وجوہات کو زیر غور نہیں لایا گیا،‏احتساب عدالت نے جلد بازی میں فیصلہ دیا،، عدالت عالیہ سے پھر استدعا کی گئی کہ ‏3ریفرنسز کو یکجا کرنے سے متعلق احتساب عدالت کا فیصلہ کالعدم قرار دیا جائے، واضح رہے کہ اس سے قبل اسلام آباد ہائیکورٹ نے تینوں ریفرنسز کو الگ الگ رکھنے کا احتساب عدالت کا فیصلہ کالعدم قرار دیا تھا ،، جبکہ احتساب عدالت نے ایک بار پھر ریفرنسز پر دلائل سننے کے بعد اپنے فیصلے کو ہی برقرار رکھتے ہوئے تینوں ریفرنسز الگ الگ رکھنے کا حکم دیا تھا ،، نوازشریف کے وکیل نے احتساب عدالت میں موقف اختیار کیا تھا کہ تینوں ریفرنسز مشترک ہیں ،، جن کے گواہان بھی مشترکہ ہی ہیں ،، وہ تمام ریفرنسز پر دلائل بھی ایک ہی دینگے،، تاہم احتساب عدالت نے نواز شریف کے وکیل کی استدعا مسترد کر دی تھی ،، جس کے بعد ایک بار پھر عدالت عالیہ کا دروازہ کھٹکھٹایا گیا ،،

Most Popular