وفاقی وزیر خزانہ اسحاق ڈار نے جے آئی ٹی کے الزامات کو بے بنیاد قراردیتے ہوئے اعتراضات سپریم کورٹ میں جمع کرا دئیے

وفاقی وزیر خزانہ اسحاق ڈار نے جے آئی ٹی کے الزامات کو بے بنیاد قراردیتے ہوئے اعتراضات سپریم کورٹ میں جمع کرا دئیے

وفاقی وزیر خزانہ اسحاق ڈار نے جے آئی ٹی تحقیقات کوبدنیتی پرمبنی قرار دیتے ہوئے اعتراضات سپریم کورٹ میں جمع کر دئیے۔اسحاق ڈار کی جانب سے اٹھائے گئے اعتراضات میں کہا گیا کہ عدالتی حکم میں میرے ٹیکس گوشواروں کا کوئی تذکرہ نہیں تھا،درخواستگزار نے بھی ٹیکس گوشواروں پر اعتراض نہیں کیا، جے آئی ٹی نے مینڈیٹ سے تجاوز کی اور وجوہات نہیں بتائیں، جے آئی ٹی میں پیشی کے روز تمام ریکارڈ فراہم کردیا تھا، تحقیقاتی ٹیم نے اثاثے چھپانے اور ٹیکس چوری کا بے بنیاد الزام لگایا،آمدن اوراثاثوں سے متعلق کوئی سوال نہیں کیا گیا،نیب کو آمدن سے زائد اثاثوں کی تحقیقات میں کچھ نہیں ملا تھا جس پر انکوائری بند کرنا پڑی تھی۔۔اعتراض میں مزید کہا گیا کہ جے آئی ٹی نے عطیہ کی ہوئی رقم پر ٹیکس معاف کرانے کا الزام عائد کیا, 2003 سے 2005 تک 8.2ملین پاونڈ کمائے،اس عرصے کے دوران 1.56 ملین بیٹے کو تحفے میں دئیے، بیرون ملک کمائی گئی آمدن قانونی طور پر پاکستان میں ظاہر کرنے کا پابند نہیں ہوں۔عدالت پورٹ کے متن کو مسترد کر کے ریلیف فراہم کرے

Most Popular