شہبازشریف جے آئی ٹی کے سامنے پیش، اپنا بیان ریکارڈ کرادیا۔

شہبازشریف جے آئی ٹی کے سامنے پیش، اپنا بیان ریکارڈ کرادیا۔

وزیراعلی پنجاب شہبازشریف پاناما معاملے کی تحقیقات کرنے والی جے آئی ٹی کے سامنے پیش ہوئے،جے آئی ٹی نے شہباز شریف سے 4 گھنٹے تک پوچھ گچھ کی ۔ جے آئی ٹی نے انہیں طلب کیا تھا اوروہ اپنے ہمراہ متعلقہ ریکارڈ اور دستاویزات ساتھ لائے۔اس سے قبل شہبازشریف نے وزیراعظم نوازشریف اوروفاقی وزیر داخلہ چوہدری نثارعلی خان سے ملاقات کی۔ جس میں پاناما جے آئی ٹی کی جانب سے اٹھائے جانے والے ممکنہ سوالوں کے جواب سے متعلق مشاورت کی گئی۔ بعد ازاں شہباز شریف چوہدری نثار علی خان کے ہمراہ کسی بھی سرکاری پروٹوکول کے بغیر جوڈیشل اکیڈمی پہنچے۔جے آئی ٹی کے سامنے پیش ہونے کے بعد میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے شہبازشریف نے کہا کہ ہم عدالتوں اورقانون کا احترام کرتے ہیں، جے آئی ٹی نے انہیں پیشی کا نوٹس بجھوایا تھا، انہوں نے جے آئی ٹی کے سامنے اپنا بیان ریکارڈ کرادیا ہے۔ وزیراعظم پاکستان بھی اسی جے آئی ٹی کے سامنے پیش ہوئے تھے۔ وزیراعظم نوازشریف اورمیں نے پیش ہوکرقانون کی حکمرانی کی حقیرخدمت کی ، اس سے ثابت ہوا ہم منتخب سیاستدانوں کے دلوں میں قانون کا بڑا احترام ہے۔شہبازشریف کی پیشی کے موقع پرجوڈیشل اکیڈمی کے اطراف سیکیورٹی انتہائی سخت تھی، اکیڈمی کے اطراف پولیس کے 2500اہلکار تعینات تھے جب کہ مسلم لیگ (ن) کے کارکنوں سمیت کسی بھی غیر متعلقہ شخص کو جوڈیشل اکیڈمی کے قریب جانے نہیں دیا گیا۔واضح رہے کہ جے آئی ٹی کے سامنے حسین نواز 5 ، حسن نواز دو جب کہ نواز شریف ایک مرتبہ پیش ہوچکے ہیں جب کہ اسحاق ڈار اور وزیر اعظم کے داماد کیپٹن ریٹائرڈ صفدر کو بھی طلبی کے سمن جاری ہوچکے ہیں۔

Most Popular