حکمرانوں کی ہٹ دھرمی نے انھیں یہاں تک پہنچایا ہے۔ خورشید شاہ

حکمرانوں کی ہٹ دھرمی نے انھیں یہاں تک پہنچایا ہے۔ خورشید شاہ

قومی اسمبلی میں اپوزیشن لیڈر خورشید شاہ نے کہا ہے کہ پاناما کیس کا فیصلہ کھلی کتاب کی صورت میں نظر آ رہا ہے، نوازشریف عقل سے کام لیں اور نیا وزیراعظم لے آئیں، حکمرانوں کی ہٹ دھرمی نے انھیں یہاں تک پہنچایا ہے، ہم نے جمہوریت کیلئے جانیں دیں اور جیلیں بھی کاٹیں، جمہوریت کی مضبوطی کے لیے لڑتے رہے، نوازشریف کو اپنا فیصلہ رات تک کر لینا چاہیے،نوازشریف نے جونیئر ٹیم سے مشاورت کی اورسینئر کو نظر اندازکیا،چوہدری نثار اور حکومت کو ایک دوسرے پر کوئی اعتماد نہیں رہا،ہمارا کام حکومت کو اچھی ایڈوائس دینا ہے اگر ہماری ایڈوائس سے حکومت بچ جائے تو ہمیں خوشی ہوگی۔میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے اپوزیشن لیڈر نے کہا کہ وزیراعظم اپنی سچائی اور ظلم کا بتانا چاہتے ہیں تو ضرور بتائیں، ہم چاہتے ہیں نیا وزیراعظم آئے اور حکومت اپنی مدت پوری کرے، اسمبلیوں کو تحلیل کرنے کی حمایت نہیں کرتے، پیپلزپارٹی کے خلاف کئی سکینڈل بنے، کبھی اداروں سے نہیں لڑے، حکومت نے اداروں کو دھمکیاں دیں، ججز نے ایسے ریمارکس دیئے جو تاریخ میں کبھی نہیں دیئے ہوں گے۔خورشید شاہ نے کہا ایسا کوئی کھیل نہیں کھیلا جانا چاہیے جس سے عوام کا اداروں سے اعتماد اٹھ جائے، پاناما کیس کا فیصلہ کھلی کتاب کی صورت میں نظر آ رہا ہے، ن لیگ کوپتا ہے وہ پاناماکیس میں فیل ہوئے ہیں، ملک کا وزیراعظم اقامے پر مزدوری کر رہا ہے، ظفرحجازی نے حکومت کے کہنے پر گڑبڑ کی، حکومت اب ظفر حجازی کوبچا رہی ہے۔ انہوں نے کہا کہ ہم اسمبلی تحلیل کرنے کا مطالبہ نہیں کرتے،چاہتے ہیں نیا وزیراعظم آئے اور حکومت اپنی مدت پوری کرے۔انہوں نے کہا کہ یہ لوگ اداروں سے لڑتے رہے ہیں، ان کو احساس ہونا چاہیے کہ روز روز یہ لڑائیاں نہیں ہوسکتیں،اتنا بڑا کھیل نہیں کھیلنا چاہیے کہ لوگوں کاعدالت پر سے اعتماد اٹھ جائے، اگر کوئی گڑبڑ ہوئی تو لوگوں کا جمہوریت سے اعتماد اٹھ جائے گا۔خورشید شاہ کا کہنا تھا کہ نواز شریف اسٹیبلشمنٹ کی پیداوار ہیں، ہم جمہوریت کے استحکام کے لیے لڑتے رہے، آصف زرداری اور ہم نے جیلیں کاٹیں لیکن نوازشریف جیل جانے کا سوچ بھی نہیں سکتے، وزیراعظم کو وزارت عظمیٰ چھوڑنے کا فیصلہ کرلینا چاہیے کیونکہ کوئی چیز چھپی نہیں رہی،سب سامنے آگیا ہے۔اپوزیشن لیڈر نے کہا کہ حکومت واضح طور پر کھل کر سامنے آگئی اور اس کا چہرہ قوم کے سامنے آچکا ہے، ہمارا کام حکومت کو اچھی ایڈوائس دینا ہے اگر ہماری ایڈوائس سے حکومت بچ جائے تو ہمیں خوشی ہوگی۔کیس کلیئر تھا جس میں ججوں نے ایسے ریمارکس دیئے جس کی ماضی میں مثال نہیں ملتی جب کہ نواز شریف کے خلاف 2 جج پہلے ہی فیصلہ دے چکے ہیں۔پیپلزپارٹی کے رہنما کا کہنا تھا کہ چیلنج سے کہتا ہوں کہ جس دن فیصلہ ہوا ایک چڑیا بھی پر نہیں مارے گی۔ انہوں نے کہا کہ ظفر حجازی نے حکومت کے کہنے پر ٹیمپرنگ کی جس کے بعد حکومت نے ان کا ساتھ چھوڑ دیا، سپریم کورٹ کو اس پر نوٹس لینا چاہیے۔خورشید شاہ نے کہا کہ چوہدری نثار سے میرا اختلاف ہے یہ سب جانتے ہیں لیکن ان کا موقف درست ہے، نوازشریف نے جونیئر ٹیم سے مشاورت کی اور سینئر کو نظر انداز کیا، چوہدری نثار اور حکومت کو ایک دوسرے پر کوئی اعتماد نہیں رہا، نوازشریف نے(ق)لیگ سے (ن)لیگ میں آنے والوں سے مشاورت کی۔

Most Popular