خواجہ آصف : پاکستان امریکہ کے ساتھ پرانی یاری دوستی کے نتائج پہلے سے ہی بھگت رہا ہے

 خواجہ آصف : پاکستان امریکہ کے ساتھ پرانی یاری دوستی کے نتائج پہلے سے ہی بھگت رہا ہے

وزیر خارجہ خواجہ آصف نے امریکا کو ایک بار پھر کھری کھری سنا دیں، دو ٹوک موقف اپناتے ہوئے پاکستانی وزیر خارجہ نے بتا دیا کہ کہ باتیں اب دھمکی کی زبان سے نہیں صلح کی زبان سے طے ہونگی۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان امریکہ کے ساتھ پرانی دوستی یاری کے نتائج پہلے سے ہی بھگت رہا ہے۔ ہم نے ستر ہزار جانوں اور اربوں ڈالر کا کا نقصان اٹھا لیا، ہمارا پرامن کلچر اور برداشت پر مبنی معاشرہ تھا، وہ سب برباد ہو گیا اور اس سے برے نتائج ہمیں امریکہ کیا بھگتوائے گا۔
خواجہ آصف کا کہنا تھا کہ باتیں دھمکی کی زبان سے نہیں صلح کی زبان سے طے ہوں گی،، ہمارا محفوظ ٹھکانوں سے کوئی تعلق نہیں ہے۔ امریکہ کو چاہیے کہ وہ اپنے گریبان میں جھانکے کہ اس نے 16 برس میں افغانستان میں کیا کارنامے سرانجام دیے ہیں۔’ہم امریکہ کے ساتھ دوستی بھی رکھنا چاہتے ہیں لیکن اعتماد اور عزت و وقار کے ساتھ، ہمیں ان سے کوئی معاشی امداد اور اسلحہ نہیں چاہیے، کچھ نہیں چاہیے بس صرف اور صرف احترام چاہیے عزت کریں عزت سے پیش آئیں گےوزیر خارجہ کا کہنا تھا کہ پاکستان اور امریکا کے تعلقات میں گزشتہ کئی برسوں میں برف اتنی جم گئی ہے اس کو پگھلنے میں وقت لگے گا۔ اعتماد کا فقدان راتوں رات ختم نہیں ہو گا۔ اس وقت جو کوششیں ہو رہی ہیں اس سے ہم صحیح سمت میں جا رہے ہیں اور اس سے بہتر صورتحال پیدا ہو گی۔ تیس چالیس سال کی دوستی نے امریکہ نے ہمیں بہت کچھ سیکھایا ہے، پاکستان مشکل حالات سے سر اٹھا کر نکلے گا۔۔

Most Popular