وفاقی دارالحکومت کے ریڈزون میں واقع عوامی مرکز میں لگنے والی آگ 10 گھنٹے کی طویل جدوجہد کے بعد بجھا دی گئی۔واقعے کے نتیجے میں2افراد جاں بحق

وفاقی دارالحکومت کے ریڈزون میں واقع عوامی مرکز میں لگنے والی آگ 10 گھنٹے کی طویل جدوجہد کے بعد بجھا دی گئی۔واقعے کے نتیجے میں2افراد جاں بحق

وفاقی دارالحکومت کے ریڈزون میں واقع عوامی مرکز میں لگنے والی آگ دس گھنٹے کی طویل جدوجہد کے بعد بجھا دی گئی۔ ریسکیو ذرائع کے مطابق گراونڈ فلور پر شارٹ سرکٹ کی وجہ سے آگ لگی جو چوتھی منزل تک پہنچ گئی۔ آتشزدگی کے دوگھنٹے بعد انتظامیہ نے آگ بجھانے کا پہلا دعوی کیا لیکن کولنگ کے عمل کے دوران اس میں شدت آگئی جس نے عمارت کو مکمل طور پر اپنی لپیٹ میں لے لیا۔ اس دوران کئی بار آگ بجھانے کا دعوی کیا گیا لیکن تیز ہوا کے باعث ایسا ممکن نہ ہو سکا۔ جو بالآخر دس گھنٹے کی جدوجہد کے بعد سرد پڑ گئی۔ فائربریگیڈ، میونسپل کارپوریشن، پاک نیوی اورائیرفورس نے کولنگ کے آپریشن میں حصہ لیا۔
آگ سے بچنے کیلیے دوافراد علی رضا اور اعجاز نے چوتھی منزل سے چھلانگ لگائی جنہیں شدید زخمی حالت میں ہسپتال منتقل کیا گیا تاہم علی رضا زخموں کی تاب نہ لاتے ہوئے دم توڑ گیا جبکہ اعجاز کی حالت تشویش ناک بتائی جارہی ہے۔ دوسری جانب ریسکیواہلکاروں نے آگ سے جھلسنے والے وقارعلی کو ہسپتال منتقل کیا لیکن وہ خالق حقیقی سے جا ملا۔
ذرائع کے مطابق آگ لگنے سے سی پیک، وفاقی محتسب، صنعت و پیداوار سمیت دیگر نجی اداروں کے دفاتر جل گئے جس سے اہم ریکارڈ جلنے کا خدشہ ظاہر کیا جارہا ہے۔ اسلام آباد انتظامیہ کے مطابق آگ سے ہونے والے نقصان کا فی الحال اندازہ لگانا ممکن نہیں۔

ا

Most Popular