آگ لگنے کی وجوہات جاننے کے لیے8رکنی انکوائری کمیٹی بنا دی گئی

 آگ لگنے کی  وجوہات جاننے کے لیے8رکنی انکوائری کمیٹی بنا دی گئی

اسلام آباد کے عوامی مرکز میں آگ کیسے لگی؟ وجوہات جاننے کے لیے آٹھ رکنی انکوائری کمیٹی بنا دی گئی۔ کمیٹی آگ سے ہونے والے نقصان اور دیگر پہلوؤں کا جائزہ بھی لے گی۔

اسلام آباد کے عوامی مرکز میں آتشزدگی کے معاملے پر وزارت صنعت و پیداوار حرکت میں آ گئی۔ آگ لگنے کی وجوہات معلوم کرنے کے لیے آٹھ رکنی انکوائری کمیٹی تشکیل دے دی۔ انکوائری کمیٹی میں وزارت صنعت و پیداوار،وزارت داخلہ،پاور ڈویژن کے افسران شامل ہوں گے۔ جبکہ وفاقی ٹیکس محتسب ، نیسپاک، آئیسکواورایک نجی کمپنی کا ممبر بھی انکوائری کمیٹی کا حصہ ہوں گے۔ تحقیقاتی کمیٹی کو تکنیکی معاونت کے لیے ماہرین کی خدمات لینے کا اختیار بھی دے دیا گیا ہے۔ کمیٹی آگ لگنے کی وجہ معلوم کرنے کے علاوہ اس سے ہونے والے نقصان کا تخمینہ اور دیگر پہلوؤں کا جائزہ بھی لے گی۔

ترجمان وزارت منصوبہ بندی نے عوامی مرکز میں سی پیک کے ریکارڈ کے جلنے کی خبروں کی تردید کی ہے۔ ترجمان کے مطابق سی پیک سے متعلق دستاویزات متعلقہ اداروں کے پاس محفوظ ہیں

ترجمان وزارت منصوبہ بندی کےمطابق عوامی مرکز میں سی پیک کی بنیادی دستاویزات کے موجود ہونے کا سوال ہی پیدا نہیں ہوتا۔وہاں نہ چین اور پاکستان کے درمیان طے پانے والے معاہدے موجود ہیں اور نہ ہی مستقبل میں ہونے والے معاہدوں کی تفصیلات ہیں۔ترجمان کے مطابق عوامی مرکز میں پائیڈ کا ذیلی ادارہ ہے۔،،، اس ادارے کی جانب سے کی جانے والی تحقیق پر وزارت منصوبہ بندی سرکاری دستاویزات تیار کرتی ہے۔۔اب تک جتنا بھی تحقیقی کام ہوا اور انتظامی ڈھانچے کے حوالے سے جتنی پیشرفت ہوئی اس کا مکمل ریکارڈ پائیڈ کے پاس موجود ہے۔ لہذا ڈیٹا کے لحاظ سے کوئی نقصان پہنچنے کا اندیشہ نہیں۔سی پیک معاہدے اور ان پر عملدرآمد سے متعلق تمام سرکاری دستاویزات متعلقہ وزارتوں، اداروں اور محکموں کے پاس محفوظ ہیں۔

Most Popular