اقوام متحدہ نے انیس سو اٹھانوے میں پہلی بار عالمی یوم نوجوانان منانے کی منظوری دی

اقوام متحدہ نے  انیس سو اٹھانوے میں پہلی بار عالمی یوم نوجوانان منانے کی منظوری دی

قوام متحدہ نے انیس سو اٹھانوے میں پہلی بار عالمی یوم نوجوانان منانے کی منظوری دی تھی جس کے بعد سے اسے ہر سال دنیا بھر میں بھرپور جوش و جذبے سے منایا جاتا ہے۔ دن منانے سے عالمی سطح پر نہ تو نوجوانوں کی بے روزگاری کی شرح کم ہو سکی اور نہ ہی نوجوانوں کو غربت سے بچایا جاسکا جس کا اندازہ ان اعداد و شمار سے لگایا جاسکتا ہے کہ دنیا کا ہر چوتھا نوجوان غربت کا شکار ہے اور ہر پانچواں روزگار سے محروم ہے۔ پاکستان میں کل آبادی کا نصف نوجوانوں پر مشتمل ہے، ہمارے ہاں آبادی میں سب سے زیادہ تعداد نوجوانوں کی ہے یعنی پندرہ سے تیس سال کے افراد کی عمر کی تعداد چالیس فیصد سے زائد ہے ۔ کسی بھی ریاست یا حکومت کی سب سے اہم بڑی اور اولین ذمہ داری ہے کہ وہ نوجوان نسل کے مسائل کے حل کیلئے نہ صرف ہر ممکن اقدامات کرے بلکہ قانون سازی کرے۔
نوجوانوں کو روزگار کے مواقع فراہم کئے جائیں تاکہ وہ اپنی صلاحیتوں کو بروے کار لاتے ہوئے ایک کارآمد شہری کا کردار ادا کرسکیں

Most Popular